ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

خاتون کے آپریشن سے بچہ پیدا ہونے کے دوران ڈاکٹر نے کر ڈالا ایسا کام کہ سبھی کے اڑ گئے ہوش، کیس درج

بہار کے کھگڑیا ضلع میں واقع مہیش کھنٹ تھانہ علاقے میں پرائیویٹ کلینک کی لاپرواہی سے زچہ اور بچہ دونوں کے ساتھ جو ہوا وہ بیحد ہی دردناک ہے۔

  • Share this:
خاتون کے آپریشن سے بچہ پیدا ہونے کے دوران ڈاکٹر  نے کر ڈالا ایسا کام کہ سبھی کے اڑ گئے ہوش، کیس درج
بہار کے کھگڑیا ضلع میں واقع مہیش کھنٹ تھانہ علاقے میں پرائیویٹ کلینک کی لاپرواہی سے زچہ اور بچہ دونوں کے ساتھ جو ہوا وہ بیحد ہی دردناک ہے۔

بہار کے کھگڑیا ضلع میں واقع مہیش کھنٹ تھانہ علاقے میں پرائیویٹ کلینک کی لاپرواہی سے زچہ اور بچہ دونوں کے ساتھ جو ہوا وہ بیحد ہی دردناک ہے۔ دراصل یہاں اس معاملے میں سامنے آیا ہے کہ دونوں کی موت ہوگئی۔ حاملہ خاتون سنجو دیوی کا ڈلیوری کے دوران آپریشن کرنا پڑا۔ آپریشن کے دوران ڈاکٹر نے بچے کا سر ہی کاٹ ڈالا جس سے نوزائیدہ کی موت ہوگئی۔ وہیں زچہ خاتون کی بھی کچھ دیر بعد موت ہو گئی۔ اس واقعے کے بعد اسپتال پر کارروائی کی مانگ کو لیکر اہل خانہ نے مہش کھنٹ میں این ایچ 107  کو جام کردیا۔


واقعے کے بعد گوگری ایس ڈی او سبھاش چندر منڈل اور ڈی ایس پی پی کے جھا سمیت کئی افسران پہنچے اور جام کر رہے لوگوں کو سمجھا کر مظاہرے کو ختم کروایا۔ گوگری کے انومنڈل پولیس سب ڈویژنل پولیس آفیسر کا کہنا ہے واقعے کے بعد متاثر کی درخواست پر کلینک کو سیل کرکے اس کے آپریٹر سمیت آدھا درجن اسٹاف پر معالہ درج کیا جا رہا ہے۔


کیا ہے معاملہ۔۔

واقعے کے تعلق سے بتایا جا رہا ہے کہ پربتہ بلاک کے مہدیپ پور گاؤں کے امت کمار نے اپنی بیوی سنجو دیوی کو ڈلیوری کرانے کیلئے ٹاٹا ایمرجنسی اسپتال میں داخل کرایا تھا لیکن اسپتال انچارج نے آپریشن کے دوران بچے کا گلا ہی کاٹ دیا۔ اس کے بعد بچے کو باہر نکالا گیا۔ اسی دوران خاتون کی بھی طبیعت بگڑنے لگی جس کے بعد ان کی بھی موت ہو گئی۔

آپریٹر اور اسپتال ملازم فرار
زچہ۔بچہ کی موت کی خبر جیسے ہی گھر والوں کو ملی سبھی لوگوں نے پنگامہ شروع کر دیا۔ اہل خانہ کے ہنگامہ کرتے دیکھ اسپتال آریٹر اور ملازم کلینک چھوڑ کر فرار ہو گئے ہیں۔ بتادیں کہ کھگڑیا ڈی ایم کی ہدایت پر کئی مرتبہ نرسنگ ہوم پر کارروائی ہوئی ہے لیکن ضلع میں دو درجن سے زیادہ بغیر لائسنس کے نرسنگ ہوم کھلے ہوئے ہیں جس کے خلاف محکمہ صحت کوئی کارروائی نہیں کر رہا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jan 13, 2021 01:12 PM IST