ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

رات کو نشے کی حالت میں خاتون ڈاکٹر کے کوارٹر میں گھس گئے DIG اور کر ڈالی ایسی گھنونی حرکت، مچ گیا ہنگامہ

ذرائع سے موصولہ اطلاع کے مطابق رینج ڈی آئی جی سریندر پرساد نے خاتون ڈاکٹر کے موبائل پر بدتمیزی بھری کال کی۔ متاثرہ سی آر پی ایف کمپوزٹ اسپتال میں تعینات ہے۔ جب خاتون ڈاکٹر نے ڈی آئی جی کے فون پر کوئی جواب نہیں دیا تو ملزم ڈی آئی جی رات کے وقت ڈاکٹر کے کوارٹر میں گھس گیا۔

  • Share this:
رات کو نشے کی حالت میں خاتون ڈاکٹر کے کوارٹر میں گھس گئے DIG اور کر ڈالی ایسی گھنونی حرکت، مچ گیا ہنگامہ
جب خاتون ڈاکٹر نے ڈی آئی جی کے فون پر کوئی جواب نہیں دیا تو ملزم ڈی آئی جی رات کے وقت ڈاکٹر کے کوارٹر میں گھس گیا۔

بہار کے مظفر پور میں واقع (CRPF) کے مظفر پور گروپ سینٹر میں تعینات ایک خاتون ڈاکٹر (Lady Doctor) نے مظفر پور سینٹر میں عہدے پر فائز ایک بڑے عہدیدار پر سنگین الزام لگائے ہیں۔ سینئر افسران کو دی جانے والی تحریری شکایت میں خاتون ڈاکٹر نے مظفر پور گروپ سینٹر کے رینج ڈی آئی جی سریندر پرساد پر جنسی طور پر غلط رویے کا الزام عائد کیا ہے۔ الزامات کے بعد ملزم ڈی آئی جی کے خلاف سی آر پی ایف ہیڈ کوارٹرز لیبل سے کارروائی شروع ہوگئی ہے۔ اس دوران ملزم ڈی آئی جی سریندر پرساد کو مظفر پور گروپ سینٹر سے ہٹا کر پٹنہ آفس سے منسلک کردیا ہے۔


سریندر پرساد کے خلاف

سریندر پرساد کے خلاف محکمانہ سطح پر تحقیقات جاری ہیں جس کی نگرانی دہلی ہیڈ کوارٹر سے کی جارہی ہے۔ ادھر متاثرہ خاتون ڈاکٹر چھٹی پر چلی گئی ہیں۔ ذرائع سے موصولہ اطلاع کے مطابق رینج ڈی آئی جی سریندر پرساد نے خاتون ڈاکٹر کے موبائل پر بدتمیزی بھری کال کی۔ متاثرہ سی آر پی ایف کمپوزٹ اسپتال میں تعینات ہے۔ جب خاتون ڈاکٹر نے ڈی آئی جی کے فون پر کوئی جواب نہیں دیا تو ملزم ڈی آئی جی رات کے وقت ڈاکٹر کے کوارٹر میں گھس گیا۔ الزام ہے کہ اس وقت سریندر پرساد نشے کی حالت میں تھا۔


بہار میں ، شراب بندی کے درمیان شراب پینے کا الزام کافی سنگین ہے۔ متاثرہ خاتون ڈاکٹر نے کسی طرح سے صورتحال کو سنبھالا اور پٹنہ میں بہار ہیڈ کوارٹر اور پٹنہ سیکٹر کے آئی جی سے شکایت کی۔ شکایت کے بعد جب دہلی ہیڈ کوارٹر نے اس معاملے کی تحقیقات شروع کی تو مظفر پور گروپ سینٹر میں ہنگامہ مچ گیا۔ حالانکہ جھپہاں میں واقع سی آر پی ایف گروپ سنٹر میں تعینات کوئی بھی عہدیدار پروٹوکول کا حوالہ دیکر کچھ بھی بولنے کو تیار نہیں ہیں۔

ادھر غلط رویے سے متاثرہ خاتون ڈاکٹر چھٹی پر چلی گئی ہیں۔ ان سے بھی کوئی رابطی نہیں ہو پا رہا ہت۔ بتایا جا رہا ہے کہ وہ دماغی طور پر تناؤ میں ہیں۔ مظفر پور کے جھپہاں میں واقع سی آر پی ایف گروپ سینٹر میں زبردست ہلچل مچی ہے۔ زیادہ تر اہلکار اور عہدی دار دبی زبان میں ملزم پر کارروائی کی مانگ کر رہے ہیں۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 13, 2021 08:18 AM IST