ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

کورونا کے خوف سے آن لائن ہو رہی ہے بکرے کی بکنگ، بکرا تاجر کررہے ہیں ہوم ڈلیوری

لاک ڈاؤن اور کورونا کے سبب جہاں کئ طرح کا کاروبار بند ہوگیا ہے۔ وہیں بہار میں روزگار خستہ حالی کے کاگار پر کھڑا ہے لیکن لاک ڈاؤن نے مزید کئ دوسرے روزگار کو قائم کرنے کا موقع بھی فراہم کیا ہے۔ انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کے ذریعہ اب تاجر پیشہ لوگ اپنے روزگار کو بڑھا رہے ہیں۔

  • Share this:
کورونا کے خوف سے آن لائن ہو رہی ہے بکرے کی بکنگ، بکرا تاجر کررہے ہیں ہوم ڈلیوری
لاک ڈاؤن اور کورونا کے سبب جہاں کئ طرح کا کاروبار بند ہوگیا ہے۔ وہیں بہار میں روزگار خستہ حالی کے کاگار پر کھڑا ہے لیکن لاک ڈاؤن نے مزید کئ دوسرے روزگار کو قائم کرنے کا موقع بھی فراہم کیا ہے۔ انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کے ذریعہ اب تاجر پیشہ لوگ اپنے روزگار کو بڑھا رہے ہیں۔

لاک ڈاؤن اور کورونا کے سبب جہاں کئ طرح کا کاروبار بند ہوگیا ہے۔ وہیں بہار میں روزگار خستہ حالی کے کاگار پر کھڑا ہے لیکن لاک ڈاؤن نے مزید کئ دوسرے روزگار کو قائم کرنے کا موقع بھی فراہم کیا ہے۔ انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کے ذریعہ اب تاجر پیشہ لوگ اپنے روزگار کو بڑھا رہے ہیں۔ وہیں قربانی کا بکرا بھی اب پٹنہ میں آن لائن دستیاب ہوگیا ہے۔ پٹنہ کے عالم گنج سے آن لائن بکرے کا کاروبار اوپریٹ کیا جارہا ہے۔ آن لائن بکنگ کرنے والے لوگوں کے گھروں پر بکرا پہنچانے کا انتظام ہے۔ ۲۶ سال کے عبدالطاہر اور ان کے پانچ دوستوں نے اس کاروبار کو شروع کیا ہے۔

عبدالطاہر پٹنہ یونیورسیٹی سے سائنس میں گریجویشن کرنے کے بعد اپنے لئے بکرے کے کاروبار کو روزگار کے لئے منتخب کیا ہے۔ عبدالطاہر کا کہنا ہیکہ اس کاروبار میں جہاں دوسرے لوگوں کو بھی روزگار فراہم کیا جاسکتا ہے وہیں آمدنی بھی ٹھیک ٹھاک ہو جارہی ہے۔ عبدالطاہر کا کہنا ہیکہ جو لوگ قربانی کے بکرے کے لئے انہیں فون کررہے ہیں۔ انہیں وہاٹس ایپ کے ذریعہ بکرے کا فوٹو بھیجا جاتا ہے۔ بکرا پسند آنے پر بکرے کی ہوم ڈلیوری کرا دی جاتی ہے۔



بتادیں کہ کورونا کے خوف کے سبب جو لوگ بکرا اپنے گھر پر نہیں منگا رہے ہیں ان کی قربانی کرنے کا بھی یہاں انتظام ہے۔ باقاعدہ قربانی کرکے اس کا گوشت غریبوں میں تقسیم کرنے کا انتظام کیاگیا ہے اور قربانی کرنے والے کا حصہ ان کے گھر پہنچانے کا بھی انتظام ہے۔ عبدالطاہر نے بتایا کی کافی لوگ اس طرح سے بھی قربانی کریں گے۔ آن لائن بکنگ کر لوگ اس کا فائدہ اٹھا رہے ہیں۔


عبدالطاہر کا کہنا ہیکہ روزانہ بیس سے تیس بکرے کی بکنگ ہورہی ہے۔ پٹنہ کے مختلف محلہ سے بکنگ کاآرڈر آتا ہے اور بکنگ کرنے والوں کے گھر تک ہم لوگ بکرے کو پہنچا دیتے ہیں۔ کئ لوگوں نے کہا ہیکہ قربانی کر کے گوشت پہنچا دیجئے اسے بھی ہم لوگ پورا کریں گے۔اس طرح سے دیکھا جائے تو آن لائن بکنگ سے جہاں لوگوں کو گھر بیٹھے بکرا دستیاب ہو جارہا ہے وہیں سوشل ڈسٹنسنگ اور لاک ڈاون قانون کا فالو بھی کیا جارہا ہے۔ پٹنہ میں کورونا کے بڑھ رہے مریضوں سے لوگوں میں دہشت کا ماحول ہے، نتیجہ کے طور پر خریدار کے ساتھ ساتھ آن لائن بکرے کی بکنگ سے تاجر پیشہ لوگوں کو زبردست فائدہ ہورہا ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jul 28, 2020 02:53 PM IST