உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بنگال کے ووٹر لسٹ میں روہنگیائی شہریوں کے تعلق سے الیکشن کمیشن کا بڑا بیان

    بنگال کے ووٹر لسٹ میں روہنگیائی شہریوں کے تعلق سے الیکشن کمیشن کا بڑا بیان

    بنگال کے ووٹر لسٹ میں روہنگیائی شہریوں کے تعلق سے الیکشن کمیشن کا بڑا بیان

    آج چیف الیکشن کمشنر نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے صاف طور پر کہا کہ کمیشن ووٹر لسٹ پر نظر ثانی نہیں کرے گا۔ بی جے پی کو ثبوت دینے ہوں گے کہ کون کون روہنگیائی شہریوں کے نام شامل کئے گئے ہیں۔

    • Share this:
    کولکاتہ۔ بنگال اسمبلی الیکشن میں یوں تو کئی ایسے مدعے ہیں جس پر سیاسی جماعتوں کے لیڈران ایک دوسرے کو گھیرنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ تاہم اب ان سب کے ساتھ الیکشن میں روہنگیائی شہریوں کا مدعا بھی زور و شور سے اٹھایا جارہا ہے۔ بی جے پی نے الیکشن کمیشن سے شکایت کی ہے کہ برسراقتدار جماعت ترنمول کانگریس نے سیاسی فائدے کے لئے روہنگیائی شہریوں کو ووٹر لسٹ میں شامل کیا ہے۔

    بی جے پی کے ریاستی صدر اور ایم پی دلیپ گھوش نے کہا ہے کہ پانچ لاکھ سے زائد روہنگیا مسلمانوں کے نام ووٹر لسٹ میں شامل کئے گئے ہیں تاکہ ترنمول کانگریس کو ووٹ مل سکے لیکن ووٹر لسٹ میں روہنگیائی شہریوں کو شامل کرنا ملک کی سلامتی کے لئے خطرہ ہے۔ دلیپ گھوش نے کہا کہ بنگلہ دیش کی سرحد کے قریبی اضلاع میں ووٹروں کی تعداد تشویش ناک ہے۔

    چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑا کی سربراہی میں الیکشن کمیشن کا فل بینچ بنگال اسمبلی انتخابات کی تیاریوں کا جائزہ لینے کے لئے بنگال کے دورے پر ہے۔ آج چیف الیکشن کمشنر نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے صاف طور پر کہا کہ کمیشن ووٹر لسٹ پر نظر ثانی نہیں کرے گا۔ بی جے پی کو ثبوت دینے ہوں گے کہ کون کون روہنگیائی شہریوں کے نام شامل کئے گئے ہیں۔ الیکشن کمشنر نے ترنمول کے اِس الزام کو بھی خارج کردیا کہ بی ایس ایف کے جوان ایک خاص پارٹی کو ووٹ ڈالنے کے لئے لوگوں پر دباؤ بنا رہے ہیں۔ اسی درمیان چیف الیکشن کمشنر نے کہاکہ ریاستی پولیس بھی اہم ذمہ داریاں ادا کرتی ہیں اور ریاست میں امن وامان کی صورت حال کو وہ بخوبی نبھاتی ہے۔ چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ انتخابات کی تاریخ کا اعلان ہونے کے بعد ریاست میں بائیک ریلی کی اجازت نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ انتخابات کرانا ہی اپنے آپ میں چیلنج ہوتا ہے اور بنگا ل میں بھی چیلنج ہے۔ تاہم، الیکشن کمیشن نے ریاست میں پرامن الیکشن کی امید جتائی ہے۔
    Published by:Nadeem Ahmad
    First published: