உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Exclusive: ہندوستان نے اروناچل میں چینی دراندازی کو کیا ناکام، کئی فوجیوں کو پکڑا، بعد میں پھر کیارہا

    چینی فوجیوں نے اروناچل پردیش  (Arunachal Pradesh)  میں توانگ میں گھس کر ہندستانی سرحد پر بنائے گئے خالی بنکروں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی تھی۔

    چینی فوجیوں نے اروناچل پردیش (Arunachal Pradesh) میں توانگ میں گھس کر ہندستانی سرحد پر بنائے گئے خالی بنکروں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی تھی۔

    چینی فوجیوں نے اروناچل پردیش (Arunachal Pradesh) میں توانگ میں گھس کر ہندستانی سرحد پر بنائے گئے خالی بنکروں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی تھی۔

    • Share this:
      چین کے فوجیوں نے ایک بار پھر ہندوستان کی سرزمین میں داخل ہونے کی ہمت کی ہے۔ تاہم ، ہندستانی فوج  (Indian Army)  نے چینی فوجیوں   (Chinese Soldiers)  کے منصوبوں کو ناکام بناتے ہوئے عارضی طور پر اس کے بہت سے فوجیوں کو اپنی تحویل میں لے لیا ہے ۔  نیوز 18 کو موصول ہونے والی معلومات کے مطابق  چینی فوجیوں نے اروناچل پردیش  (Arunachal Pradesh)  میں توانگ میں گھس کر ہندستانی سرحد پر بنائے گئے خالی بنکروں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی تھی۔ خبر ہے کہ چین کے 200 کے قریب فوجی ہندوستانی سرحد کے اندر داخل ہوئے تھے جسے ہندستانی فوجیوں نے بھگا دیا۔

      معلومات کے مطابق یہ واقعہ گزشتہ ہفتے بم لا اور یانگ تسے بارڈر پاس کے درمیان لائن آف ایکچول کنٹرول (ایل اے سی) کے قریب پیش آیا۔ ذرائع کے مطابق لائن آف ایکچول کنٹرول پر چینی فوجیوں نے سرحد میں داخل ہونے کی کوشش کی جس کی ہندستانی فوجیوں نے سخت مخالفت کی اور کچھ چینی فوجیوں کو عارضی طور پر حراست میں لے لیا گیا۔

      سرکاری ذرائع نے نیوز 18 ڈاٹ News18.com  کام کو بتایا کہ چینی فوجیوں کی حراست کی خبر سامنے آنے کے بعد مقامی فوجی کمانڈر سطح کے مذاکرات ہوئے اور بعد میں چینی فوجیوں کو رہا کر دیا گیا۔ فوج کی جانب سے اس پورے واقعے پر ابھی تک کوئی سرکاری تبصرہ نہیں کیا گیا ہے۔ تاہم ، دفاعی اور سکیورٹی ذرائع نے نیوز 18 ڈاٹ کام کو بتایا کہ ہندستانی سکیورٹی فورسز کو کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

      بتادیں  کہ ہندستان ۔ چین سرحد کو رسمی طور پر سرحد میں تقسیم نہیں کیا گیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان سرحد کے حوالے سے تنازعہ ہے۔ تاہم دونوں ممالک کی سرحدوں پر امن قائم رکھنے کے لیے کئی معاہدے کیے گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق دونوں فریق اپنی سرحدوں کو مدنظر رکھتے ہوئے گشت کرتے رہتے ہیں۔ کئی بار ایسا بھی ہوتا ہے کہ جب دونوں ملکوں کے فوجی ایک ہی وقت پر ایک ہی جگہ پہنچ جاتے ہیں تو دونوں ممالک کے فوجیوں کے درمیان کشیدگی بڑھ جاتی ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: