ہوم » نیوز » No Category

بن بیاہی ماں کی اسپتال میں ہوئی شادی ، گواہ بنا گود میں بیٹھا نوزائیدہ

پٹنہ : پٹنہ سے متصل داناپور میں ایک منفرد شادی دیکھنے کو ملی۔ ایک بن بیاہی ماں کی شادی رچائی گئی ، جس کا گواہ بنا اسی کی محبت کی نشانی معصوم نوزائیدہ اور باراتي بنے صدر اسپتال کے ڈاکٹر اور نرس۔

  • News18
  • Last Updated: Dec 04, 2015 03:05 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بن بیاہی ماں کی اسپتال میں ہوئی شادی ، گواہ بنا گود میں بیٹھا نوزائیدہ
پٹنہ : پٹنہ سے متصل داناپور میں ایک منفرد شادی دیکھنے کو ملی۔ ایک بن بیاہی ماں کی شادی رچائی گئی ، جس کا گواہ بنا اسی کی محبت کی نشانی معصوم نوزائیدہ اور باراتي بنے صدر اسپتال کے ڈاکٹر اور نرس۔

پٹنہ : پٹنہ سے متصل داناپور میں ایک منفرد شادی دیکھنے کو ملی۔ ایک بن بیاہی ماں کی شادی رچائی گئی ، جس کا گواہ بنا اسی کی محبت کی نشانی معصوم نوزائیدہ اور باراتي بنے صدر اسپتال کے ڈاکٹر اور نرس۔


یہ معاملہ داناپور میں دیکھنے کو ، ملا جہاں بهٹا کی رہنے والی پرینکا نے ایک بچے کو جنم دیا۔ اس کی اطلاع ملتے ہی یوپی کے مغل سرائے کا رہنے والا اس کا عاشق راہل یادو دوڑا چلا آیا۔


گھر والے ان کی محبت نہیں مان رہے تھے، لیکن بچے کی پیدائش نے ایک بن بیاہی ماں اور ایک باپ کو بچے پر مستقبل میں اٹھنے والی انگلی کو روكنے کے لئے دنیا کہ پروا کئے بغیر شادی کیلئے تیارکردیا ۔


پھر کیا تھا اسپتال کے ڈی ایس اشوک کمار اور ضلع کونسلر اوم پرکاش نے مل کر مقامی سوناري مندر میں منڈپ سجا کر دونوں کو پورے رسم رواج سے کے ساتھ سات جنموں کے بندھن میں باندھ دیا۔ اس شادی میں نوزائیدہ کے ساتھ ساتھ اسپتال کی نرسیں اور عملہ کے ارکان بھی شامل ہوئے اور سب نے مل کر دولہا دولہن کو دعائیں دیں۔


اس منفرد شادی میں لڑکی کے نانا نانی بھی شریک ہوئے اور دونوں نے عاشق جوڑے کو آشیرواد دے کر رخصت كيا۔


نوشادی شدہ جوڑے کے مطابق ان کا معاشقہ تین برسوں سے چل رہا تھا اور آج وہ شادی کے بندھن میں بندھ گئے۔

First published: Dec 04, 2015 03:05 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading