ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

جھارکھنڈ میں بیرون مزدور کے روزگار کا موضوع پھر زیر بحث، مزدوروں کے اس موضوع پر سیاست ہوئی تیز

جھارکھنڈ میں بیرون مزدور کے روزگار کا موضوع اب سیاسی زبان پر گونجنے لگا ہے۔ دراصل لاک ڈاؤن کے دوران مزدوری کے مقصد سے ملک کے مختلف شہروں میں مقیم کئی لاکھ کی تعداد میں مزدور اپنے وطن کو واپس لوٹے تھے

  • Share this:
جھارکھنڈ میں بیرون مزدور کے روزگار کا موضوع پھر زیر بحث، مزدوروں کے اس موضوع پر سیاست ہوئی تیز
بیرون مزدور کے روزگار کا موضوع 

جھارکھنڈ میں بیرون مزدور کے روزگار کا موضوع اب سیاسی زبان پر گونجنے لگا ہے۔ دراصل لاک ڈاؤن کے دوران مزدوری کے مقصد سے ملک کے مختلف شہروں میں مقیم کئی لاکھ کی تعداد میں مزدور اپنے وطن کو واپس لوٹے تھے۔ ریاستی حکومت نے ان مزدوروں کو مقامی سطح پر روزگار مہیا کرانے کی یقین دہانی کرائی تھی۔اس کے لئے کئی منصوبوں کی شروعات بھی کی گئی ۔

جن میں * ان ٹرینڈ مزدوروں کے لئے وزیر اعلیٰ شرمک منصوبہ

* برسہ حرت گرام یوجنا

* پوٹو ہو کھیل وکاس یوجنا

* نیلامبر پیتامبر جل سمردھی یوجنا

ریاستی حکومت کے ذریعہ ان منصوبوں کی شروعات کے باوجود ریاست سے مزدوروں کی ہجرت کا سلسلہ لگاتار جاری ہے ۔

بیرون مزدور کے روزگار کے موضوع پر بی جے پی رکن اسمبلی نوین جیسوال نے ریاستی حکومت پر نشانہ سادھتے ہوئے کہا کہ اسکلڈ مزدوروں کو روزگار سے جوڑنے میں ریاستی حکومت پوری طرح ناکام ثابت ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے کی طرح ہی مزدوروں کے ہجرت کا سلسلہ جاری ہے۔

وہیں ریاستی حکومت کی ہمنوا پارٹی جھارکھنڈ مکتی مورچہ کی مانے تو پہلی بار کسی حکومت نے ریاست بھر کے مزدوروں کا ڈاٹا بیس تیار کیا ہے ۔ جے ایم ایم کے ترجمان منوج کمار پانڈے نے کہا کہ ریاست کے مزدوروں کے روزگار کے لئے انکی حکومت نے دوسرے ریاستوں کے ساتھ ایم او یو کیا ۔

دراصل سیاست کا مزہ ہی ایسا ہے کہ جو کورونا وبا کے ماحول میں بھی سرکاری چیلنجوں کا درد نہیں سمجھتی ہے ۔ لحاظہ بیرون مزدوروں پر سیاست کئی سوالوں پر کھڑی ہے ۔ سوال وہی ہے کہ حکومت کے روزگار کے منصوبے آخر زمین پر کارگر ہوئی تو کتنی ۔۔ اور اگر کامیاب ہوئی تو ہجرت کیوں ۔۔۔۔؟
Published by: sana Naeem
First published: Aug 20, 2020 12:15 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading