ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

کیا مغربی بنگال میں کانگریس کو ہے مضبوط لیڈر کی تلاش؟ 

عبدالمنان نے سونیا گاندھی کوخط لکھ کر کہا ہے کہ گزشتہ ایک مہینے سے پارٹی کی صدارت کا عہدہ خالی ہے۔ اس کی وجہ سے پارٹی کا کام متاثر ہو رہا ہے۔ ادھیررنجن چودھری تجربہ کار لیڈر ہیں اور اس سے قبل بھی وہ پارٹی کی صدارت سنبھال چکے ہیں۔ اس لئے انہیں عہدہ سونپا جائے۔

  • Share this:
کیا مغربی بنگال میں کانگریس کو ہے مضبوط لیڈر کی تلاش؟ 
کیا مغربی بنگال میں کانگریس کو ہے مضبوط لیڈر کی تلاش؟ 

بنگال میں آئندہ سال ہونے والے اسمبلی الیکشن کے لئے ہر پارٹی تیاریوں مں جٹی ہے اور عوام میں اپنی گرفت مضبوط بنانے کی کوششوں میں ہے۔ سیاسی جماعتوں نے  الیکشن کے لٸے حکمت عملی بنانی شروع کردی ہے۔ کانگریس نے بنگال میں لیفٹ کے ساتھ اتحاد کو ضروری بتاتے ہوٸے بنگال میں کانگریس کی کمان ایم پی ادھیر رنجن چودھری کو سونپے جانے کی اپیل کی ہے اور اس تعلق سے  کانگریس ہاٸی کمان کو خط لکھا ہے۔


مغربی بنگال اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور کانگریس کے سینئر لیڈر عبد المنان نے کانگریس کی کارگزار صدر سونیا گاندھی سے مطالبہ کیا ہے کہ مغربی بنگال پردیش کانگریس کمیٹی کی صدارت کی ذمہ داری لوک سبھا میں کانگریس کے لیڈر ادھیر رنجن چودھری کو سونپی جائے۔ سینئر کانگریسی لیڈر سومن مترا کے انتقال کے بعد سے ہی ریاستی کانگریس کے صدر کا عہدہ ایک ماہ سے زیادہ عرصہ سے خالی ہے۔ اس عہدہ کیلئے پارٹی کو ایک ایسے لیڈر کی تلاش ہے جو 2021 کے اسمبلی انتخاب میں پارٹی کی قیادت سنبھال سکے۔ سومن مترا سے پہلے ادھیر رنجن چودھری ہی ریاستی کانگریس کے صدر تھے لیکن ان کے ساتھ دیگر لیڈران کے اختلاف اور کانگریس میں مچی بھگدڑ کے بعد انہیں اس عہدہ سے ہٹاکر سینئر کانگریسی لیڈر عبدالمنان کو پارٹی کی کمان سونپ دی گئی تھی۔


عبدالمنان نے سونیا گاندھی کوخط لکھ کر کہا ہے کہ گزشتہ ایک مہینے سے پارٹی کی صدارت کا عہدہ خالی ہے۔ اس کی وجہ سے پارٹی کا کام متاثر ہو رہا ہے۔ ادھیررنجن چودھری تجربہ کار لیڈر ہیں اور اس سے قبل بھی وہ پارٹی کی صدارت سنبھال چکے ہیں۔ اس لئے انہیں عہدہ سونپا جائے۔ ایسے وقت میں جب لوک سبھا الیکشن میں بی جے پی نے بنگال میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوٸے  18 سیٹیں حاصل کی تھیں اور لیفٹ جماعتیں کھاتا کھولنے میں ناکام رہی تھیں ان حالات میں ادھیر رنجن چودھری نے اپنی جیت کا سلسلہ برقرار رکھا تھا اور کانگریس کو مرشدآباد و مالدہ میں دو سیٹیں ملی تھیں۔ کہاجاتا ہے کہ ان سیٹوں پر کامیابی کے لئے ادھیر رنجن چودھری و مرحوم غنی خان چودھری کے خاندان کا میجک ہی کام آیا تھا۔ یہی وجہ ہے کہ ریاستی کانگریس لیڈران پارٹی کی کمان مضبوط لیڈر کو سونپے جانے کی ضرورت پر زور دے رہے ہیں۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 05, 2020 12:32 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading