ہوم » نیوز » No Category

ہندوستانی آئین کی بنیاد سیکولرزم پر ہے اور یہی اس کی خوبصورتی ہے: مولانا محمد مسلم

پٹنہ۔ ’’آج ہم سڑسٹھ واں یوم جمہوریہ منارہے ہیں۔ ہمارا دل خوشیوں سے لبریز ہے۔

  • News18
  • Last Updated: Jan 26, 2016 07:35 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ہندوستانی آئین کی بنیاد سیکولرزم پر ہے اور یہی اس کی خوبصورتی  ہے: مولانا محمد مسلم
پٹنہ۔ ’’آج ہم سڑسٹھ واں یوم جمہوریہ منارہے ہیں۔ ہمارا دل خوشیوں سے لبریز ہے۔

پٹنہ۔ ’’آج ہم سڑسٹھ واں یوم جمہوریہ منارہے ہیں۔ ہمارا دل خوشیوں سے لبریز ہے۔اسی خوشی کے اظہار کے لئے ہم یہاں یکجا ہوئے ہیں۔ بلاشبہ آج ہی کے دن 1950ء میں ہمارے ملک کا آئین نافذ ہوا۔ اس آئین کی بنیاد سیکولر زم پر ہے، یہی اس آئین کی خوبصورتی ہے جسے جاری وساری رہنا چاہئے اور اس آئین کے ساتھ کسی طرح کا کھلواڑ نہیں کرنا چاہئے۔ کیونکہ اگر ایسا کیا گیا تو یہ اس عظیم الشان ملک اور اس کے آئین کے ساتھ کھلواڑ ہوگا‘‘۔ان خیالات کا اظہار مولانا محمد مسلم مدنی صاحب نے جامعہ ابوبکر صدیق الاسلامیہ، برندابن ، مغربی چمپارن ،بہار میں منعقد یوم جمہوریہ کے پروگرام میں مجمع کو خطاب کرتے ہوئے کیا۔ مولانا نے اپنے بیان کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ہمارا ملک امن و شانتی کا گہوارہ ہے۔اس ملک میں ایک لمبے زمانے سے سبھی مذاہب کے لوگ مل جل کر پیار و محبت سے رہتے ہیں۔لہذا ہم سبھی لوگوں کو چاہئے کہ اس گنگا جمنی تہذیب کی حفاظت کریں اور کوئی ایسا اقدام نہ کریں جس سے اس کا امن و سکون غارت ہو اور اس کے آئینی ڈھانچے اور خوبصورت ماحول کو گزند پہنچے۔


                اس سے پہلے  قدیم روایات کے مطابق تسلسل کے ساتھ امسال بھی جامعہ ابوبکر صدیق الاسلامیہ اوراس کے ماتحت چلنے والے ادارہ کلیہ عائشہ صدیقہ برندابن بہار میں پرچم کشائی کی تقریب منعقد ہوئی ۔ جس میں جامعہ ابوبکر صدیق الاسلامیہ اور کلیہ عائشہ صدیقہ کے طلباء و طالبات نے مختلف رنگارنگ پروگرام پیش کئے،اس میں طلباء و طالبات اور اساتذہ اور ذمہ داران اور بھاری تعداد میں گاؤں اور علاقے کے لوگ شریک ہوئے، جس میں جامعہ اور کلیہ کے بچے اور بچیوں نے انتہائی خوبصورت نظم و نثر میں پروگرام پیش کئے جس میں وطن عزیز ہندوستان کے آئین کی خوبصورتی اور یہاں کی رنگارنگی تہذیب اور خصوصا مسلمانوں کی وطن عزیز کے لئے عظیم مساعی کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔


یوم جمہوریہ کی اس تقریب میں جن لوگوں نے خطاب کیا ان میں جامعہ کے استاد حدیث مولانا صابر فیضی،عربی زبان کے استاذ مولانا محمد طفیل سلفی اہم اور قابل ذکر ہیں۔اس پروگرام میں علاقہ کی جن مقتدر شخصیات نے شرکت فرمائی ان میں حافظ انعام الحق فیضی، عبدالرحمن سلفی، ماسٹر نورالعین ،نظام الدین وغیرہ اہم اور قابل ذکر ہیں۔

First published: Jan 26, 2016 07:34 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading