ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

انتخابی سال میں مودی کابینہ میں شامل ہوگی جےڈی یو؟ نتیش کمارکو سخت مشکلات کا سامنا

انتخابی سال میں کیا جےڈی یومرکزی حکومت میں شامل ہوگی، اس سوال کا جواب بہارکی تمام سیاسی پارٹیاں جاننا چاہتی ہیں۔ حالانکہ اس بحث کےساتھ یہ سوال بھی ہےکہ مودی کابینہ میں شامل ہونے کےلئےجے ڈی یو کے سامنے کونسی رکاوٹ ہے۔

  • Share this:
انتخابی سال میں مودی کابینہ میں شامل ہوگی جےڈی یو؟ نتیش کمارکو سخت مشکلات کا سامنا
بہاراسمبلی انتخابات سے قبل مودی کابینہ میں جے ڈی یو کے شامل ہونے کی بحث ایک بارپھرشروع ہوگئی ہے۔

پٹنہ: بہاراسمبلی انتخابات کولےکرریاست کی تمام سیاسی پارٹیاں تیاری میں مصروف ہوگئی ہیں، لیکن اسی درمیان سیاسی حلقوں میں ایک بحث بہت تیزی سے ہورہی ہےکہ کیا جے ڈی یو، وزیراعظم مودی کی کابینہ میں شامل ہوسکتی ہے؟ اس بحث کے تیزہونےکے بعد بہارکی سیاست میں ہلچل بھی تیزہوگئی ہے۔ جے ڈی یوسے سوال پوچھے جانےلگے، لیکن کسی لیڈر نے ردعمل ظاہرنہیں کیا۔


آخرکارجے ڈی یوقانون سازپارٹی کےلیڈرللن سنگھ سامنےآئےاورکہا کہ یہ وزیراعظم مودی کا دائرہ اختیارہے، لیکن طےنتیش کمارہی کریں گے۔ للن سنگھ نے یہ بھی واضح کیا کہ اس وقت اس موضوع کوبے وجہ طول دیا جارہا ہے۔ جےڈی یولیڈرللن سنگھ نےتصویرواضح کرنےکی بھلے ہی کوشش کی ہو، لیکن جے ڈی یوکےلئے مودی کابینہ میں شامل ہونا اتنا آسان نہیں ہونےجارہا ہے۔ کچھ ایسی پریشانیاں ہیں، جس سے نجات حاصل کرنا پارٹی کےلئےآسان نہیں ہوگا۔


جے ڈی یوکے سامنے یہ پریشانی


نتیش کمارکےلئےانتخابی سال میں ذات کی بنیاد پرماحول بنانےکا چیلنج ہے۔ کابینہ میں کس ذات اورمذہب کوجگہ دیں یا نہ دیں، یہ طےکرنا آسان نہیں ہوگا۔ جےڈی یونےلوک سبھا الیکشن میں انتہائی پسماندہ، کشواہا اوردلت کارڈ کھیلا تھا، کابینہ توسیع میں بھی ان طبقات کا خیال رکھنا ہوگا۔  نتیش کمارکےبے حد خاص مانےجانے والےآرسی پی سنگھ اورللن سنگھ کےساتھ ساتھ سنتوش کشواہا کےنام پربحث ہے، لیکن ان کےشامل ہونےسےنتیش کمارکی سوشل انجیئنرنگ پراثرپڑسکتا ہے۔

بہاراسمبلی انتخابات میں سیٹوں کی تقسیم ابھی تک طے نہیں ہوئی ہے۔ جب تک تصویرصاف نہیں ہوتی، جے ڈی یوکےلئےمودی کابینہ میں شامل ہونا مشکل ہوسکتا ہے۔ این آرسی سمیت کچھ ایسےفیصلے، جومرکزی حکومت لےسکتی ہے، کابینہ میں شامل ہونےکےبعد اس پر مخالفت کرنا جےڈی یوکےلئےمشکل ہوسکتا ہے۔ اسمبلی انتخابات میں مسلم رائے دہندگان کو میسیج دینےکےلئےمودی کابینہ میں کسی مسلم لیڈرکوشامل کرنا ہوگا۔

تلاش کرنےہوں گے کئی جواب

دراصل وزیراعلیٰ نتیش کمارشہریت ترمیمی بل کی حمایت کرنےکےبعد این آرسی کی مخالفت کرچکے ہیں۔ ایسےمیں اوپرلکھےگئےنکات اہم ہیں، جن کا جواب وزیراعلیٰ نتیش کمارکوتلاش کرنا ہوگا۔ بہارکےسینئرصحافی روی اپادھیائےنےکہا کہ نتیش کمارکےلئے ذات پرمبنی ماحول تیارکرنا آسان نہیں ہوگا۔ انتخابی سال میں کسےخوش کریں یا کسےناراض۔ اس کا خیال رکھنا ہوگا۔ وہیں جےڈی یوکےسینئرلیڈرشیام رجک بھی سوشل انجینئرنگ کے بہانے سماج کےآخری مقام پرکھڑے لوگوں کی ترقی کی بات کہہ کربڑا اشارہ کررہے ہیں۔ بہرحال، ان خبروں کےدرمیان بی جے پی صدرامت شاہ واضح کرچکےہیں کہ بہاراسمبلی انتخابات نتیش کمارکی قیادت میں ہی لڑا جائےگا۔

اس لئےبہاربی جے پی کےلیڈرجےڈی یوکےمودی کابینہ میں شامل ہونےکی خبروں سے خوش ہیں۔ بی جے پی ترجمان اجیت چودھری نےکہا بھی کہ اس سےاین ڈی اے مضبوط ہوگا۔ تاہم بہارکی سیاست کےچانکیہ مانے جانے والے نتیش کمارکی کوشش ہوگی کہ ان سوالوں کا جواب تلاش کرنےکےبعد ہی پارٹی مودی کابینہ میں شامل ہو۔
First published: Jan 05, 2020 07:40 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading