ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

مانجھی کی پارٹی کا دعویٰ۔ گٹھ بندھن کے لئے دوسری پارٹیوں سے آ رہے ہیں فون، لیکن ہم این ڈی اے کے ساتھ رہیں گے

جیتن رام مانجھی کی پارٹی ہندستانی عوام مورچہ کے ترجمان دانش رضوان نے دعویٰ کیا ہے کہ بہار میں ابھی سیاسی ڈرامہ ختم نہیں ہوا ہے۔ ہماری پارٹی کے پاس دوسری پارٹی کے لوگ فون کر رہے ہیں اور گٹھ بندھن کی بات کر رہے ہیں۔

  • Share this:
مانجھی کی پارٹی کا دعویٰ۔ گٹھ بندھن کے لئے دوسری پارٹیوں سے آ رہے ہیں فون، لیکن ہم این ڈی اے کے ساتھ رہیں گے
جیتن رام مانجھی کی فائل فوٹو

پٹنہ۔ بہار الیکشن کے نتائج (Bihar Election Results 2020) نے جس طرح سے سیاسی ہلچل تیز کی ہے اس کے بعد سے سیاسی جوڑ توڑ کی کوششیں شروع ہو گئی ہیں۔ جیتن رام مانجھی (Jitan Ram Manjhi) کی پارٹی ہندستانی عوام مورچہ کے ترجمان دانش رضوان نے دعویٰ کیا ہے کہ بہار میں ابھی سیاسی ڈرامہ ختم نہیں ہوا ہے۔ ہماری پارٹی کے پاس دوسری پارٹی کے لوگ فون کر رہے ہیں اور گٹھ بندھن کی بات کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کوئی بھی پارٹی ہمیں توڑنے کی کوشش نہ کرے ہم کسی بھی قیمت پر این ڈی اے کا ساتھ نہیں چھوڑیں گے۔


دانش رضوان نے کہا کہ اپوزیشن کے ہمارے کئی دوست گٹھ بندھن کو لے کر مجھے فون کر رہے ہیں۔ پارٹی ترجمان ہونے کے ناطے میں یہ واضح کر دینا چاہتا ہوں کہ ہم کسی بھی قیمت پر این ڈی اے کا ساتھ چھوڑنے کو تیار نہیں ہیں۔ ہمارے لیڈر جیتن رام مانجھی نے واضح طور پر کہا ہے کہ ہندستانی عوام مورچہ وزیر اعلیٰ نتیش کمار جی کی قیادت میں الیکشن میں تھی، ہم ان کے ساتھ ہیں اور جب تک جان ہے تب تک ان کے ساتھ ہی رہیں گے۔


بتا دیں کہ ہندستانی عوام مورچہ سیکولر کے سربراہ جیتن رام مانجھی جمعرات کو اپنی چار رکنی قانون ساز پارٹی کے رہنما چنے گئے ہیں۔ مانجھی کے گھر پہنچے 'ہم' کے سبھی نو منتخب ارکان اسمبلی نے سابق وزیر اعلیٰ کو قانون ساز پارٹی کا لیڈر منتخب کیا ہے۔ بہار اسمبلی الیکشن میں پارٹی کی بہتر کارکردگی کو لے کر 'ہم' کے رہنماوں اور کارکنان کے ذریعہ مانجھی کی عزت افزائی کی گئی ہے۔

ہم قانون ساز پارٹی کا لیڈر منتخب کئے جانے کے بعد مانجھی نے کانگریس کے نو منتخب ارکان اسمبلی کو ریاست کی ترقی کے لئے این ڈی اے میں شامل ہونے کی صلاح دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ذاتی طور پر جہاں تک میرا ماننا ہے تو ہم کہیں گے کہ کانگریس کے ارکان اسمبلی غور وفکر کریں اور نتیش جی کا ساتھ دیں۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 13, 2020 10:17 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading