ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

کھلے میں باتھ روم کیلئے گئی لڑکیوں کا لڑکے بنانے لگے ویڈیو، مخالفت کرنے پر کیا کچھ ایسا کہ اڑ جائیں گے ہوش

بہار کے کیمور ضلع کے موہنیا تھانہ کے مجان گاؤں میں باتھ روم کرنے جارہی لڑکیوں کا منچلے لڑکوں کے ذریعے ویڈیو بنانے کی شکایت کی گئی ہے۔ اتنا ہی نہیں ویڈیو کو لیکر مار پیٹ اور گولی باری میں آدھا درجن لوگ زخمی ہو گئے ہیں۔

  • Share this:
کھلے میں باتھ روم کیلئے گئی لڑکیوں کا لڑکے بنانے لگے ویڈیو، مخالفت کرنے پر کیا کچھ ایسا کہ اڑ جائیں گے ہوش
علامتی تصویر

بہار کے کیمور ضلع کے موہنیا تھانہ کے مجان گاؤں میں باتھ روم کرنے جارہی لڑکیوں کا منچلے لڑکوں کے ذریعے ویڈیو بنانے کی شکایت کی گئی ہے۔ اتنا ہی نہیں ویڈیو کو لیکر مار پیٹ اور گولی باری میں آدھا درجن لوگ زخمی ہو گئے ہیں۔ سبھی کی حالت خطرے سے باہر بتائی جارہی ہے۔ جائے واقعہ پر پولیس نے پہنچ کر جانچ شروع کردی ہے۔ واقعے کے سلسلے میں بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ جمعے کی دیر شام گاؤں کی کچھ لڑکیاں ٹوائلیٹ کیلئے بدھار میں ئی ہوئی تھیں۔ اسی دوران گاؤں کے ہی تین منچلے ویڈیو بنانے لگے۔

لڑکیوں نے ویڈیو بنانے کی مخالفت کی اور اس کی جانکاری اپنے اہل خانہ کو دی۔ اس کے بعد رات میں ہی ان تین لوگوں کی مخالفت کررہے ایک شخص کی جم کر پٹائی کردی جس کو ابتدائی علاج کے بع ڈاکٹروں نے بہتر علاج کیلئے وارانسی ریفر کردیا۔ اس کے بعد سنیچر کو پھر سے ملزم لوگوں کے حمایتی لڑکیوں ے اہل خانہ سے الجھ گئے۔ جب معاملہ سنگین ہوگیا تو مچلوں کے اہل خانہ نے اپنے لالئسنسی بندوق سے فائرنگ شرو کردی جہاں چھ لوگ زخمی ہوگئے۔  ادھر پولیس اسے مندر اراضی تنازعہ مان رہی ہے۔

لڑکیوں کے اہل خانہ نے لگائے الزام

لڑکی کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ کل دیر شام کو ہم جب کھیت سے واپس گھر آرہے تھے تو دیکھا کہ میرے گھر کی لڑکیوں سے گاؤں کے کچھ لڑکے الجھے ہوئے ہیں۔ ہم نے پوچھا تو پتہ چلا کہ لڑکیاں ٹوائلیٹ کرنے کے بعد تالاب کے پاس آئیں تو لڑکوں کے ذریعے ویڈیو بنائی گئی جس کی مخالفت کرنے پر الجھ گئے۔ ان لڑکوں سے ہم نے پوچھا تو ہم سے بھہ مار پیٹ کئے اور آج اسی بات کو لیکر لائسنسی رائفل سے کئی راؤنڈ فائرنگ کردئے جس سے 6  لوگ زخمی ہوگئے جبکی ایک کی حالت نازک ہے۔


 
First published: Jul 05, 2020 04:04 PM IST