உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کنہیا کمار کا وزیر اعظم مودی پر حملہ، ویڈیو یا میٹ بدل دینے سے نہیں بدلے گا ملک

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    پٹنہ۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) طلبہ یونین کے صدر کنہیا کمار نے آج وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے الزام لگایا کہ تمام یونیورسٹیوں میں ایمرجنسی جیسے حالات بنا دیئے گئے ہیں اور 'میٹ' یا 'ویڈیو' بدل دینے سے ملک میں حقیقی بدلاو نہیں ہو گا۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      پٹنہ۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) طلبہ یونین کے صدر کنہیا کمار نے آج وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے الزام لگایا کہ تمام یونیورسٹیوں میں ایمرجنسی جیسے حالات بنا دیئے گئے ہیں اور 'میٹ' یا 'ویڈیو' بدل دینے سے ملک میں حقیقی بدلاو نہیں ہو گا۔

      وزیر اعظم مودی کو ایک کھلے خط میں کنہیا نے دادری کے واقعہ کا ذکر کیا جہاں اخلاق نامی ایک شخص کو محض اس شک کی بنیاد پر پیٹ پیٹ کر مار دیا گیا تھا کہ اس کے خاندان نے اپنے گھر میں بیف رکھا تھا اور کھایا تھا۔ کنہیا نے اس موقع پر جے این یو منعقد میں نو فروری کے ایک متنازعہ پروگرام سے وابستہ مبینہ ویڈیو کا بھی ذکر کیا۔

      طالب علم رہنما نے خط میں لکھا، 'مودی جی، میٹ یا ویڈیو بدل دینے سے ملک نہیں بدلے گا۔ ملک اس وقت بدلے گا جب اس کے لوگوں کی حالت بہتر ہوگی۔ آپ کے دور حکومت میں چیزیں صرف بد سے بدتر ہوئی ہیں۔ نوجوانوں اور طالب علموں نے بڑی امید کے ساتھ آپ کو منتخب کیا تھا۔

      انہوں نے کہا، 'ایسا لگتا ہے کہ ہر یونیورسٹی میں ایمرجنسی کی صورت حال بن گئی ہے۔ کیا آپ انہی حالات کا وعدہ کر رہے تھے، جب آپ پورے ملک میں 'اچھے دن' کے نعرے لگا رہے تھے۔

      کنہیا فروری میں جے این یو احاطے میں ایک تقریب کے سلسلے میں غداری کے ایک معاملے میں ضمانت پر ہیں۔ یہ تقریب پارلیمنٹ پر حملے کے مجرم افضل گرو کو پھانسی پر لٹکانے کے خلاف منعقد کی گئی تھی۔ تقریب میں مبینہ طور پر ملک مخالف نعرے لگے تھے۔

      خط میں مزید لکھا گیا، 'اگر آپ نے گزشتہ دو سال میں ترقیاتی کام کئے ہوتے تو آپ کو اس کی تشہیر کرنے کے لئے کروڑوں روپے خرچ نہیں کرنے پڑتے۔
      First published: