ہوم » نیوز » No Category

ڈرائیور کی بیوی بن کر لوٹی ندھی ، ممبر اسمبلی پر تھا اغوا کا الزام

پٹنہ : مسوڑھی سے مبینہ طور پر اغوا کی گئی لڑکی ندھی کے معاملے میں نیا انکشاف ہوا ہے۔ اغوا کی کہانی کے محض 36 گھنٹے کے اندر ہی ایک نئی کہانی کے ساتھ ندھی ، ممبر اسمبلی سدھارتھ اور پنکج پولیس اور میڈیا کے سامنے پیش ہوئے۔

  • News18
  • Last Updated: Jan 29, 2016 07:05 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ڈرائیور کی بیوی بن کر لوٹی ندھی ، ممبر اسمبلی پر تھا اغوا کا الزام
پٹنہ : مسوڑھی سے مبینہ طور پر اغوا کی گئی لڑکی ندھی کے معاملے میں نیا انکشاف ہوا ہے۔ اغوا کی کہانی کے محض 36 گھنٹے کے اندر ہی ایک نئی کہانی کے ساتھ ندھی ، ممبر اسمبلی سدھارتھ اور پنکج پولیس اور میڈیا کے سامنے پیش ہوئے۔

پٹنہ : مسوڑھی سے مبینہ طور پر اغوا کی گئی لڑکی ندھی کے معاملے میں نیا انکشاف ہوا ہے۔ اغوا کی کہانی کے محض 36 گھنٹے کے اندر ہی ایک نئی کہانی کے ساتھ ندھی ، ممبر اسمبلی سدھارتھ اور پنکج پولیس اور میڈیا کے سامنے پیش ہوئے۔


ندھی سب سے پہلے اپنے عاشق اور ممبر اسمبلی کے ڈرائیور پنکج کے ساتھ ایس ایس پی منو مہاراج کی رہائش گاہ پہنچی اور اغوا کی بات کو خارج کرتے ہوئے خود اپنی مرضی سے عاشق کے ساتھ جانے کی بات کہی۔ اس کے بعد ندھی اپنے عاشق پنکج سکریٹریٹ تھانہ پہنچی ، جہاں پر اغوا کا الزام جھیلنے والے ممبر اسمبلی سدھارتھ بھی آگئے ۔


ندھی نے ممبر اسمبلی اور اپنے عاشق پنکج کو بے قصور بتاتے ہوئے اپنے والد پر سنگین الزامات لگائے۔ ندھی نے کہا کہ اس کیس کا ممبر اسمبلی سے کچھ بھی لینا دینا نہیں ، جبکہ پنکج سے اس نے اپنی مرضی سے شادی کی ہے۔


ندھی نے کہا کہ میں بالغ ہوں اور میں نے اپنی مرضی سے شادی کی ہے ۔ میرے والد میری شادی زبردستی ایک بوڑھے شخص سے کروانا چاہتے تھے ، جب میں نے انکار کیا ، تو میرے ساتھ مار پیٹ کی گئی۔ ندھی نے اس معاملہ میں اپنے والد پر پیسے لینے کا الزام لگایا۔ ندھی نے کہا کہ اگر میں نہیں بھاگتی تو والد مجھے مار ڈالتے۔


ادھر اس معاملہ پر جب ممبر اسمبلی سدھارتھ سے پوچھا گیا ، تو انہوں نے کہا کہ اس معاملہ سے میرا کوئی لینا دینا نہیں ہے۔ ممبر اسمبلی کے مطابق اپنے ڈرائیور پنکج کو انہوں نے ہی پولیس کے پاس جانے کا مشورہ دیا تھا۔

First published: Jan 29, 2016 07:05 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading