ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

خواتین کے تحفظ کے معاملے میں سب سے محفوظ ترین شہر مانا جارہا ہے کولکاتہ، یہاں جانیں کیسے

ملک کی ایک بڑی آبادی تعلیم سے دور ہے اور ان سب میں اہم خواتین کے تحفظ کو لے کر ملک بھر میں بے چینی دیکھی جارہی ہے۔ آئے دن ایسے واقعات سننے کو ملتے ہیں جس میں خواتین تشدد و بربریت کا نشانہ بنائی جاتی ہیں۔ ایسے میں خواتین کو تحفظ ملے تو کیسے کیا قدم اٹھایا جائے ان سب پر غور و فکر کیا جا رہا ہے۔

  • Share this:
خواتین کے تحفظ کے معاملے میں سب سے محفوظ ترین شہر مانا جارہا ہے کولکاتہ، یہاں جانیں کیسے
آئے دن ایسے واقعات سننے کو ملتے ہیں جس میں خواتین تشدد و بربریت کا نشانہ بنائی جاتی ہیں۔ ایسے میں خواتین کو تحفظ ملے تو کیسے کیا قدم اٹھایا جائے ان سب پر غور و فکر کیا جا رہا ہے۔

کولکاتہ: موجودہ دور میں ملک نے کافی ترقی کی ہے تعلیمی میدان میں بھی نمایاں کامیابی حاصل ہوئی ہے لیکن ان سب کے باوجود آج بھی غریبی ایک اہم مسئلہ ہے. ملک کی ایک بڑی آبادی تعلیم سے دور ہے اور ان سب میں اہم خواتین کے تحفظ کو لے کر ملک بھر میں بے چینی دیکھی جارہی ہے۔ آئے دن ایسے واقعات سننے کو ملتے ہیں جس میں خواتین تشدد و بربریت کا نشانہ بنائی جاتی ہیں۔ ایسے میں خواتین کو تحفظ ملے تو کیسے کیا قدم اٹھایا جائے  ان سب پر غور و فکر کیا جا رہا ہے۔ وہیں کولکاتا ایک ایسے شہر کے طور پر ابھر کر سامنے آیا ہے جو خواتین کے لئے محفوظ ترین شہر مانا جارہا ہے۔ جی ہاں کولکاتا ایک ایسا شہر ہے جہاں خواتین سب سے زیادہ محفوظ ہیں۔

نیشنل کرائم ریکارڈ بیورو کی ایک رپورٹ کے مطابق ملک کے 19 میٹرو شہروں میں کولکاتا خواتین کیلئے سب سے محفوظ شہر ہے۔ بیورو کی رپورٹ کے مطابق 2019 میں سب سے کم کولکاتا میں خواتین کے خلاف جنسی زیادتی کے واقعات رونما ہوئے جبکہ عصمت دری کا ایک بھی واقعہ پیش نہیں آیا۔ کچھ شکایات درج کرائی گئیں ہیں وہ 18سال سے زاتد کے عمر کے تھے یعنی 2019 میں بچیوں کے خلاف جنسی زیادتی کے کوئی بھی واقعات نہیں ہوئے ہیں۔


نیشنل کرائم ریکارڈ بیورو کی رپورٹ کے مطابق  2019 میں کولکاتا میں جنسی زیادتی کے 14کیس رجسٹرڈ ہوئے جو دوسرے شہروں کے مقابلے کافی کم ہیں۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ تمل ناڈو کے شہر کوئمبٹور میں خواتین کے خلاف جنسی زیادتی کے واقعات 2019 میں ایک بھی نہیں ہوئے ہیں۔ اسی طرح بہار کی راجدھانی پٹنہ میں جنسی زیادتی کے 12واقعات ہوئے ہیں۔بنگال پولس نے نیشنل کرائم ریکارڈ بیورو کی رپورٹ پر کہا ہے کہ خواتین کے تحفظ کے معاملے میں ہم نے چوکسی کا مظاہر ہ کیا ہے اور کولکاتا شہر میں خواتین کی حفاظت کے تئیں بیداری کی بہترین مثال قائم کی گئی ہے جس کا نتیجہ ہے کہ یہاں ہراسانی کے واقعات کم ہوئے ہیں۔


نیشنل کرائم ریکارڈ بیورو کے مطابق 2019 میں دہلی میں جنسی زیادتی کے 12,902 کیس درج ہوئے ہیں، ممبئی میں 6519 کیس درج ہوئے ہیں جب کہ اترپردیش میں سب سے زیادہ خواتین کے خلاف زیادتی کے  59,853 کیس درج ہوئے ہیں، راجستھان میں 41,550کیس درج ہوئے ہیں اور مہاراشٹر میں 37,144کیس درج ہوئے ہیں۔اترپردیش کے غازی آباد شہر میں 2019میں 59 کیس درج ہوئے ہیں۔راجستھان ملک میں سب سے غیر محفوظ ریاست ہے۔ راجستھان میں گھریلو تشدد کے 18,432 کیس درج ہوئے ہیں۔
Published by: sana Naeem
First published: Oct 08, 2020 09:44 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading