ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

قاتلانہ حملے میں بیوی اور ایک بیٹی کو کھو چکے کولکاتا کے مولانا ہارون رشید نے بیٹی کے علاج کے لئے مدد کی اپیل کی

ٹیپو سلطان مسجد کے امام مولانا ہارون رشید نے اپنی بیٹی کی شادی کیلئے آئے رشتے سے انکار کر دیا تھا۔ انکار سے دلبرداشتہ لڑکے نے مولانا کے گھر والوں پر قاتلانہ حملہ کردیا۔ اس وقت ان کے گھر میں ان کی دو بیٹیاں اور اہلیہ موجود تھیں۔ حملہ اتنا شدید تھا کہ مولانا کی اہلیہ اور چھوٹی بیٹی کی موت ہوگئی جبکہ دوسری بیٹی اسپتال میں زِندگی اور موت کی جنگ لڑ رہی ہے۔

  • Share this:
قاتلانہ حملے میں بیوی اور ایک بیٹی کو کھو چکے کولکاتا کے مولانا ہارون رشید نے بیٹی کے علاج کے لئے مدد کی اپیل کی
قاتلانہ حملے میں بیوی اور بیٹی کو کھو چکے مولانا ہارون کی بیٹی کے علاج کے لئے مدد کی اپیل

کولکاتہ۔ قاتلانہ حملے میں زندہ بچ گئی بیٹی کے علاج کے لئے مولانا ہارون رشید نے  مدد کی اپیل کی ہے۔ کولکاتا کے ٹیپو سلطان مسجد کے نائب امام مولانا ہارون رشید نے اپنی بیٹی کے علاج کے لیے حکومت سے مدد کی اپیل کی ہے۔ کولکاتا کے اقبال پور علاقے میں مقیم مولانا کے گھر میں گھس کر گزشتہ ماہ قاتلانہ حملہ کیا گیا تھا۔ حملے میں مولانا کی ایک بیٹی اور ان کی اہلیہ کی موت ہوچکی ہے جبکہ مولانا کی دوسری بیٹی اسپتال میں زیر علاج ہے۔ شہر کے سرکاری ایس ایس کے ایم اسپتال میں زیر علاج مولانا کی بیٹی کو اسپتال کی جانب سے ڈسچارج کر دیا گیا ہے اور گھر والوں کو اپنے طور پر علاج کرانے کی ہدایت دی گئی ہے لیکن مولانا  اپنی بیٹی کا علاج کرانے میں ناکام ہیں۔ ان کے مطابق وہ بیٹی کو بچانا چاہتے ہیں لیکن مالی طور پر کمزور ہیں ایسے میں بیٹی کا علاج کیسے ہو یہ ایک بڑا سوال ہے۔


ٹیپو سلطان مسجد کے امام مولانا ہارون رشید نے اپنی بیٹی کی شادی کیلئے آئے رشتے سے انکار کر دیا تھا۔ انکار سے دلبرداشتہ لڑکے نے مولانا کے گھر والوں پر قاتلانہ حملہ کردیا۔ اس وقت ان کے گھر میں ان کی دو بیٹیاں اور اہلیہ موجود تھیں۔ حملہ اتنا شدید تھا کہ مولانا کی اہلیہ اور چھوٹی بیٹی کی موت ہوگئی جبکہ دوسری بیٹی اسپتال میں زِندگی اور موت کی جنگ لڑ رہی ہے۔


مولانا کے مطابق علاج میں لاپرواہی برتی جارہی ہے۔ کہا جارہا ہے کہ کورونا کے بڑھتے مریضوں کے پیش نظر اسپتالوں میں بیڈ نہیں ہے ایسے میں دیگر مریضوں کو ڈسچارج کیا جارہا ہے۔ مولانا اسپتال انتظامیہ کے رویے سے حیران ہیں۔


شہر کا ٹیپو سلطان مسجد وہ تاریخی مسجد ہے جہاں الیکشن کے دنوں میں سیاسی لیڈران کا آنا جانا لگا رہتا ہے۔ خود وزیر اعلی ممتا بنرجی بھی عید کا چاند نکلتے ہی مبارکباد دینے کے لئے یہاں آتی ہیں لیکن اسی مسجد کے امام کے ساتھ پیش آئے حادثے پر کوئی اقدام نہیں اٹھایا گیا۔ مولانا ہارون رشید نے حکومت کی بے توجہی کو افسوسناک بتاتے ہوئے وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی سے مدد کی اپیل کی ہے۔ مولانا نے کہا کہ ان کا خاندان بکھر چکا ہے۔ وہ ٹوٹ چُکے ہیں لیکن اپنی بیٹی کے لئے جینا چاہتے ہیں۔ اسے زندگی دینا چاہتے ہیں۔ آج جمعہ کے خطبے میں بیٹی کے لئے دعا کی اپیل کے ساتھ پھوٹ پھوٹ کر روتے ہوئے مولانا ہارون رشید نے اپنی بیٹی کے لئے انصاف کی اپیل کی۔

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Oct 09, 2020 06:21 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading