உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    خونخوار پرشانت بوس کی جگہ یہ  بدنام زمانہ بن سکتا ہے ماؤنواز کا سپریم کمانڈر، 20 نومبر کو بھارت بند کا اعلان

    موصولہ اطلاعات کے مطابق اب پرشانت بوس کی جگہ مسیر بسرا کو ای آر بی کا سکریٹری بنایا جا سکتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ جھارکھنڈ سے پولٹ بیورو میں دو ماؤنواز تھے، پرشانت بوس کی گرفتاری کے بعد  صرف مسیر بسرا ہی پولٹ بیورو میں شامل عسکریت پسند ہیں۔

    موصولہ اطلاعات کے مطابق اب پرشانت بوس کی جگہ مسیر بسرا کو ای آر بی کا سکریٹری بنایا جا سکتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ جھارکھنڈ سے پولٹ بیورو میں دو ماؤنواز تھے، پرشانت بوس کی گرفتاری کے بعد صرف مسیر بسرا ہی پولٹ بیورو میں شامل عسکریت پسند ہیں۔

    موصولہ اطلاعات کے مطابق اب پرشانت بوس کی جگہ مسیر بسرا کو ای آر بی کا سکریٹری بنایا جا سکتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ جھارکھنڈ سے پولٹ بیورو میں دو ماؤنواز تھے، پرشانت بوس کی گرفتاری کے بعد صرف مسیر بسرا ہی پولٹ بیورو میں شامل عسکریت پسند ہیں۔

    • Share this:
      جھارکھنڈ، بہار، بنگال اور اڈیشہ کے بدنام زمانہ نکسلی سپریم کمانڈر 72 سالہ پرشانت بوس کو عدالت نے سات دن کے پولیس ریمانڈ پر بھیج دیا۔ ایک کروڑ کی بدنام زمانہ انعامی رقم اور سی پی آئی ماؤنواز کے پولت بیورو ممبر پرشانت بوس کے ساتھ ساتھ ان کی اہلیہ شیلا مرانڈی سمیت چھ ملزمین وریندر ہنسدا، راجو توڈو، کرشنا بہنڈا اور گروچرن بودرا کو بھی سات دن کی پولیس ریمانڈ دی گئی ہے۔ بتا دیں کہ ان کی گرفتاری کے بعد پولیس نے اتوار کو ہی سرائیکیلا سب ڈویژنل مجسٹریٹ کی عدالت میں ریمانڈ کی درخواست کی تھی۔ اس درمیان  پولت بیورو کے رکن اور ای آر بی کے سکریٹری پرشانت بوس اور ان کی اہلیہ شیلا مرانڈی کی گرفتاری کے بعد، ماؤنوازوں کے ای آر بی نے 20 نومبر کو بھارت بند کی کال دی ہے۔
      بتا دیں کہ اس سے پہلے ماؤنوازوں نے 15 سے 19 نومبر تک یوم احتجاج منانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ماؤنوازوں کا الزام ہے کہ پرشانت بوس اور شیلا مرانڈی کو پولیس حراست میں لے کر ذہنی اور جسمانی طور پر تشدد کیا جا رہا ہے۔ اس کے ساتھ ہی ذرائع سے موصولہ اطلاع کے مطابق سی پی آئی ۔ ماؤنواز کے سیکنڈ ان کمانڈ اور ای آر بی کے سکریٹری پرشانت بوس کی گرفتاری کے بعد تنظیم میں اہم ذمہ داری مسیر بسرا کو دی جائے گی۔
      موصولہ اطلاعات کے مطابق اب پرشانت بوس کی جگہ مسیر بسرا کو ای آر بی کا سکریٹری بنایا جا سکتا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ جھارکھنڈ سے پولٹ بیورو میں دو ماؤنواز تھے، پرشانت بوس کی گرفتاری کے بعد  صرف مسیر بسرا ہی پولٹ بیورو میں شامل عسکریت پسند ہیں۔
      بتایا جا رہا ہے کہ ایم پی سنیل مہتو اور ایم ایل اے رمیش منڈا کے قتل کیس میں پولس کو اہم معلومات مل سکتی ہیں۔ اس میں کئی  سفید پوش کے  نام بھی آ سکتے ہیں۔ ان نکات پر پولیس پرشانت بوس سے سختی سے پوچھ گچھ کرے گی۔ تاہم پرشانت بوس کو کہاں لے جایا گیا ہے اور کون کون سے افسران کن موڑ پر ان سے پوچھ گچھ کریں گے اس بارے میں کوئی کچھ کہنے کو تیار نہیں ہے۔

      مانا جا رہا ہے کہ ریاستی پولیس اور مرکز کی کئی جانچ ایجنسیاں مختلف دنوں میں مختلف مقامات پر اس سے پوچھ گچھ کر سکتی ہیں۔ اس دوران پولس پوری ریاست بالخصوص کولہان علاقہ میں نکسل تحریک کو لے کر چوکس ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: