ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بنگال میں مسلم آبادی کی شرح 28 فیصد ، مگر ممبران اسمبلی کی شرح صرف 20 فیصد

کلکتہ : مغربی بنگال میں گرچہ مسلم آبادی کی شرح 28فیصد کے قریب ہوچکی ہے مگر عوامی نمائندگی میں مسلم نمائندوں کی تعداد میں کوئی اضافہ نہیں ہوا ہے

  • UNI
  • Last Updated: May 26, 2016 10:23 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بنگال میں مسلم آبادی کی شرح 28 فیصد ، مگر ممبران اسمبلی کی شرح صرف 20 فیصد
ہندوستانی مسلمان: فائل فوٹو

کلکتہ : مغربی بنگال میں گرچہ مسلم آبادی کی شرح 28فیصد کے قریب ہوچکی ہے مگر عوامی نمائندگی میں مسلم نمائندوں کی تعداد میں کوئی اضافہ نہیں ہوا ہے گزشتہ اسمبلی انتخابات کی طرح اس مرتبہ بھی294اسمبلی حلقوں میں 59مسلم ممبران کامیاب ہوئے ہیں ۔یعنی 20فیصد کے قریب نمائندگی ملی ہے ۔جب کہ آبادی کے لحاظ سے مسلم نمائندگان کی تعداد کم سے کم 80ہونی چاہیے۔

گرچہ کانگریس اور ترنمول کانگریس کے مسلم ممبران کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے اور بایاں محاذ کے مسلم ممبران کی تعداد میں کمی آئی ہے ۔ترنمول کانگریس کے ٹکٹ پر اس مرتبہ32ممبران منتخب ہوئے ہیں ۔یہ گزشتہ مرتبہ سے پانچ زاید ہے ۔جب کہ کانگریس کے کل 44ممبر اسمبلی میں مسلم ممبران اسمبلی کی تعداد 18ہے جب کہ گزشتہ مرتبہ کانگریس کو 42حلقوں میں کامیابی ملی تھی اور اس کے مسلم ممبراسمبلی کی تعداد 13تھی ۔یہ بایاں محاذ کے ساتھ اتحاد کا فائدہ ملا ہے ۔جب کہ بایاں محاذ میں مسلم ممبران کی تعداد گھٹ کر 18سے 9ہوگئی ہے ۔2011میں سی پی ایم کے کل13مسلم ممبران اسمبلی تھے جو اس وقت گھٹ کے 8ہوگئی ہے ۔بایاں محاذ میں شامل فارورڈ بلاک کے ٹکٹ پر ایک مسلم ممبر اسمبلی کامیاب ہوئے ہیں ۔

کامیاب مسلم ممبران اسمبلی میں ریاستی وزراء میں جاوید احمد خان، فرہاد حکیم، عبد الرزاق ملا، مولانا صدیق اللہ چودھری (تمام ترنمول کانگریس)عبد المنان (کانگریس)انیس الرحمن ا ور علی عمران رمز(بایاں محاذ)شامل ہیں ۔

اس مرتبہ جن مشہور مسلم لیڈروں کو شکست کا سامنا کرنا پڑا ان میں ممتا بنرجی کے کابینہ میں شامل رہ چکے عبد الکریم چودھری کو اسلام پور اسمبلی حلقے سے شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے ۔منگل کوٹ سے سی پی ایم کے سینئر لیڈر شاہجہان چو دھری اور تواب علی کوسمیر گنج سے شکست ملی ہے ۔

کانگریس کے سینئر لیڈر عبد الغنی خان چودھری کے چھوٹے بھائی ابو ناصر خان چودھری جو مالدہ ضلع سے کانگریس کے ٹکٹ پر کامیاب ہوئے تھے مگر اس مرتبہ وہ ترنمول کانگریس میں شامل ہوگئے تھے مگر انہیں اپنے ہی بھتیجے عیسیٰ خان چودھری جو کانگریس کے امید وار سے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

ترنمول کانگریس کو 294اسمبلی حلقے میں 211سیٹوں پر کامیابی ملی ہے ۔کانگریس کو 44، بی جے پی کو تین ، سی پی ایم کو 26، آر ایس پی کو تین ، فارورڈ بلاک کو 2اور سی پی آئی کو ایک سیٹ پر کامیابی ملی ہے ۔
First published: May 26, 2016 10:23 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading