உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ناگالینڈ: سیکورٹی فورس کی فائرنگ میں 11 لوگوں کی موت سے کشیدگی، CM نے دئیے ایس آئی ٹی جانچ کے احکامات

    واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے ناگالینڈ کے وزیراعلیٰ نیفیو ریو نے کہا، ’مون ضلع کے اوٹنگ میں شہریوں کی موت کا افسوسناک واقعہ قابل مذمت ہے۔ غم سے نڈھال افراد خاندان کے تئیں تعزیت کا اظہار کرتا ہوں، اور زخمیوں کے جلد صحتیاب ہونے کی دعا کرتا ہوں۔

    واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے ناگالینڈ کے وزیراعلیٰ نیفیو ریو نے کہا، ’مون ضلع کے اوٹنگ میں شہریوں کی موت کا افسوسناک واقعہ قابل مذمت ہے۔ غم سے نڈھال افراد خاندان کے تئیں تعزیت کا اظہار کرتا ہوں، اور زخمیوں کے جلد صحتیاب ہونے کی دعا کرتا ہوں۔

    واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے ناگالینڈ کے وزیراعلیٰ نیفیو ریو نے کہا، ’مون ضلع کے اوٹنگ میں شہریوں کی موت کا افسوسناک واقعہ قابل مذمت ہے۔ غم سے نڈھال افراد خاندان کے تئیں تعزیت کا اظہار کرتا ہوں، اور زخمیوں کے جلد صحتیاب ہونے کی دعا کرتا ہوں۔

    • Share this:
      کوہیما: شمال مشرقی ریاست ناگالینڈ (Nagaland) میں اتوار کو اُس واقعہ کے بعد کشیدگی بڑھ گئی، جس میں مبینہ طور پر سیکورٹی فورس کی گولی سے کچھ عام لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ یہ واقعہ مون ضلع (Mon District) تیرو گائوں (Tiru Village) میں تب ہوئی جب سیکورٹی فورس نے ان لوگوں کو مبینہ طور پر این ایس سی این (NSCN) کے مشتبہ عسکریت پسند سمجھا۔ نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق واقعہ میں کم سے کم 11 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ اس کے بعد ضلع میں کشیدگی کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔ وہیں وزیراعلیٰ نے لوگوں سے امن کی اپیل بھی کی ہے۔

      فائرنگ کے اس واقعے کے بعد مقامی لوگ گھروں سے باہر نکل آئے اور احتجاج کرنے لگے۔ اُن کا کہنا ہے کہ یہ نوجوان بے قصور تھے۔ وہ قریب کی کوئلہ کان سے گھر واپس آرہے تھے۔ اس واقعے کی مذمت کرتے ہوئے سی ایم نیفیو ریو (Neiphiu Rio) نے ایس آئی ٹی جانچ کی بات کہی ہے۔ جانکاری کے مطابق واقعہ سے ناراض لوگوں نے سیکورٹی فورس کی کچھ گاڑیوں میں آگ لگادی۔ اس دوران سیکورٹی فورس نے بھیڑ کو قابو میں کرنے کے لئے فائرنگ کی، جس میں کچھ اور لوگوں کو گولی لگنے کی خبر سامنے آرہی ہے۔


      واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے ناگالینڈ کے وزیراعلیٰ نیفیو ریو نے کہا، ’مون ضلع کے اوٹنگ میں شہریوں کی موت کا افسوسناک واقعہ قابل مذمت ہے۔ غم سے نڈھال افراد خاندان کے تئیں تعزیت کا اظہار کرتا ہوں، اور زخمیوں کے جلد صحتیاب ہونے کی دعا کرتا ہوں۔ اس معاملے میں اعلیٰ سطحی ایس آئی ٹی جانچ کرے گی اور قانون کے مابق انصاف دلائے گی۔ سبھی طبقوں سے امن کی اپیل۔ ‘


      وہیں واقعہ کے بعد آسام رائفلس کی جانب سے بھی آفیشل بیان جاری کیا گیا ہے۔ اس میں کہا گیا ہے کہ ناگالینڈ کے مون ضلع کے تیرو گائوں میں عسکریت پسندوں کے آنے جانے کا بھروسے مند خفیہ ان پٹ ملا تھا۔ اس کی بنیاد پر خاص آپریشن چلائے جانے کا منصوبہ طئے ہوا تھا۔ بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ موت کے معاملے کی جانچ اعلیٰ سطح پر کورٹ آف انکوائری کے ذریعے ہوگی اور قصورواروں پر کڑی کارروائی کی جائے گی۔

      آسام رائفلس نے کہا ہے کہ عسکریت پسندوں کے خلاف اس مہم کے دوران ہوئے واقعہ میں سیکورٹی فورس کے کئی جوان بھی زخمی ہوئے ہیں۔ ان میں سے ایک جوان شہید بھی ہوا ہے۔ یہ واقعہ اور اُس کے بعد کی صورتحال غمزدہ کرنے والی ہے۔


      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: