உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پٹنہ میٹرو پروجیکٹ کو نتیش کابینہ نے دکھائی ہری جھنڈی

    پٹنہ : نتیش کابینہ نے پٹنہ میٹرو ریل پروجیکٹ پر مہر لگا دی ہے۔ منگل کو کابینہ کی میٹنگ میں پٹنہ میٹرو کی ڈی پی آر کابینہ میں پیش کی گئی ، جسے منظوری دے دی گئی۔

    پٹنہ : نتیش کابینہ نے پٹنہ میٹرو ریل پروجیکٹ پر مہر لگا دی ہے۔ منگل کو کابینہ کی میٹنگ میں پٹنہ میٹرو کی ڈی پی آر کابینہ میں پیش کی گئی ، جسے منظوری دے دی گئی۔

    پٹنہ : نتیش کابینہ نے پٹنہ میٹرو ریل پروجیکٹ پر مہر لگا دی ہے۔ منگل کو کابینہ کی میٹنگ میں پٹنہ میٹرو کی ڈی پی آر کابینہ میں پیش کی گئی ، جسے منظوری دے دی گئی۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:

      پٹنہ : نتیش کابینہ نے پٹنہ میٹرو ریل پروجیکٹ پر مہر لگا دی ہے۔ منگل کو کابینہ کی میٹنگ میں پٹنہ میٹرو کی ڈی پی آر کابینہ میں پیش کی گئی ، جسے منظوری دے دی گئی۔


      رنسپل سکریٹری برجیش میهروترا نے اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ کابینہ کی منظوری کے بعد اب اسے مرکزی حکومت کے پاس بھیجا جائے گا۔ پورے پروجیکٹ کی لاگت رقم 16960 ہزار کروڑ روپے ہے ۔ پٹنہ میٹرو کا پہلا فیز 2021 تک تیار ہو جائے گا۔


      اطلاعات کے مطابق ان میں نو ہزار کروڑ انٹرنیشنل فنڈنگ ​​ایجنسی سے حاصل کئے جائیں گے ، جبکہ باقی رقم مرکز اور ریاستی حکومت مل کر لگائے گی۔


      ڈی پی آر کو حکومت ہند کی ایجنسی رائٹس نے تیار کیا ہے۔ مرکزی حکومت سے منظوری ملنے کے بعد عالمی ٹینڈرگ کے ذریعے کمپنی کا انتخاب کیا جائے گا۔ سال 2011 میں اس منصوبے کی کوشش شروع کی گئی تھی۔


       مجوزہ میٹرو کے روٹ


      کوریڈور اے 1 : داناپور سے ميٹھاپور، بائی پاس براہ ہائی کورٹ ، جنکشن تک ، 14.5 کلومیٹر


      کوریڈور بی 1 : ديگھا سے ہائی کورٹ لنک (5.5 کلومیٹر) براہ جنکشن ، ميٹھا پور تک


      کوریڈور -2: جنکشن، ڈاك بنگلہ ، براہ گاندھی میدان، راجندرنگر ٹرمینل، اگم کنواں ، گاندھی سیتو تک، 16 کلومیٹر۔


      کوریڈور -3: بائی پاس چوک ميٹھاپور سے ديدارگنج تک ، براہ ٹرانسپورٹ نگر ، 13 کلومیٹر۔


      کوریڈور 4: بائی پاس چوک ميٹھاپور سے پھلواری شريف / ایمس براہ انيس آباد ، این ایچ 30 بائی پاس تک، 11 کلومیٹر ۔

      First published: