உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bihar Political Crisis: بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے گورنر کو سونپا استعفی نامہ

    Bihar Political Crisis: بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے گورنر کو سونپا استعفی نامہ ۔ فائل فوٹو ۔

    Bihar Political Crisis: بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے گورنر کو سونپا استعفی نامہ ۔ فائل فوٹو ۔

    Nitish Kumar Resignation: بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے گورنر کو اپنا استعفیٰ سونپ دیا ہے۔ این ڈی اے سے الگ ہونے کے بعد نتیش کمار نے مہا گٹھ بندھن کے ساتھ حکومت بنانے کا فیصلہ کیا ہے اور اس فیصلے کے بعد وہ گورنر کو استعفیٰ دینے راج بھون پہنچ گئے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Bihar | Patna | Patna
    • Share this:
      پٹنہ : بہار کے وزیراعلیٰ نتیش کمار نے گورنر کو اپنا استعفیٰ سونپ دیا ہے۔ این ڈی اے سے الگ ہونے کے بعد نتیش کمار نے مہا گٹھ بندھن کے ساتھ حکومت بنانے کا فیصلہ کیا ہے اور اس فیصلے کے بعد وہ گورنر کو استعفیٰ دینے راج بھون پہنچ گئے۔ وزیر اعلی کے عہدے سے استعفیٰ دینے کے ساتھ ہی نتیش کمار نے ایم ایل ایز کی حمایت کا خط بھی گورنر کو سونپا۔ قبل ازیں منگل کو مہا گٹھ بندھن کی میٹنگ میں نتیش کمار کو حمایت دئے جانے کے بعد سے ہی قیاس آرائی کی جارہی تھی کہ وزیر اعلی نتیش کمار این ڈی اے سے الگ ہوجائیں گے۔



       

      یہ بھی پڑھئے: کرناٹک کے ایک گاؤں میں محرم کا ایسا اہتمام، جس میں ایک بھی مسلمان نہیں!


      پارٹی ایم ایل ایز اور ایم پی کی میٹنگ کے بعد جے ڈی یو نے این ڈی اے سے الگ ہونے کا فیصلہ کیا۔ اس واقعہ کے بعد نتیش کمار استعفیٰ دینے کیلئے گورنر پھاگو چوہان کے پاس پہنچے۔ نتیش کمار استعفیٰ دینے تنہا راج بھون پہنچے۔ ان کے استعفیٰ کے ساتھ ہی بہار میں نئی ​​حکومت کی تشکیل کی راہ ہموار ہوگئی ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے:  کیا نتیش کی جے ڈی یو اور بی جے پی کے درمیان مقابلہ ہوگا؟ جانیے تفصیلات


      بہار میں اقتدار کے نئے حساب کتاب کے مطابق جے ڈی یو، آر جے ڈی، کانگریس اور بائیں بازو کی جماعتیں مل کر حکومت بنائیں گی۔ جانکاری کے مطابق نتیش کمار 160 ایم ایل ایز (آر جے ڈی-79، جے ڈی یو-45، کانگریس-19، لیفٹ-16 اور آزاد-1) کی حمایت کا خط لے کر راج بھون پہنچے تھے ۔

      اب سب کی نظریں اس پر ٹکی ہوئی ہیں کہ بہار میں نتیش کمار اور تیجسوی یادو کی نئی حکومت کب بنتی ہے۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: