உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پٹنہ میں Terror Modulel کے نشانے پر تھے پی ایم مودی، بہار پولیس کا بڑا انکشاف

    بتادیں کہ پولیس کو دہشت گردوں کے بارے میں ایک روز قبل اطلاع ملی تھی جس کے بعد گرفتاری کی کارروائی شروع کی گئی تھی۔ اسی سلسلے میں اطہر پرویز اور محمد جلال الدین کو گرفتار کر لیا گیا۔

    بتادیں کہ پولیس کو دہشت گردوں کے بارے میں ایک روز قبل اطلاع ملی تھی جس کے بعد گرفتاری کی کارروائی شروع کی گئی تھی۔ اسی سلسلے میں اطہر پرویز اور محمد جلال الدین کو گرفتار کر لیا گیا۔

    بتادیں کہ پولیس کو دہشت گردوں کے بارے میں ایک روز قبل اطلاع ملی تھی جس کے بعد گرفتاری کی کارروائی شروع کی گئی تھی۔ اسی سلسلے میں اطہر پرویز اور محمد جلال الدین کو گرفتار کر لیا گیا۔

    • Share this:
      12 جولائی کو پٹنہ کی اسمبلی میں صد سالہ تقریب کے دوران پی ایم نریندر مودی دہشت گرد تنظیم پی ایف آئی کے نشانے پر تھے۔ پی ایم مودی کے پروگرام کے دوران ٹیرر ماڈیول Terror Modulel کے ممبران گڑبڑ کرنا چاہتے تھے، اس بات کا انکشاف پٹنہ پولیس کی ایف آئی آر میں ہوا ہے جسے پھلواری شریف پولیس نے 12 جولائی کو درج کیا تھا۔

      بتادیں کہ پولیس کو دہشت گردوں کے بارے میں ایک روز قبل اطلاع ملی تھی جس کے بعد گرفتاری کی کارروائی شروع کی گئی تھی۔ اسی سلسلے میں اطہر پرویز اور محمد جلال الدین کو گرفتار کر لیا گیا۔ ان دونوں سے طویل پوچھ گچھ کے بعد پتہ چلا کہ وزیراعظم کی میٹنگ ان لوگوں کے نشانے پر تھی۔ ایف آئی آر کے مطابق پٹنہ سے کچھ مشتبہ افراد 6-7 جولائی کو پھلواری شریف کے احمد پیلس میں آئے۔ ان ملزمان نے خفیہ میٹنگ کی۔ میٹنگ میں پی ایم مودی کے پروگرام میں خلل ڈالنے کی سازش رچی گئی۔ تاہم پولیس کو 11 جولائی کی شام کو اس کا علم ہوا۔ پولیس نے فوری کارروائی کی اور اطہر پرویز اور محمد جلال الدین کو گرفتار کر لیا۔




      ایف آئی آر میں پولیس نے کہا ہے کہ وزیراعظم کے پروگرام میں بڑی تعداد میں لوگوں کو اکٹھا کرنے کے لیے کال کی گئی تھی۔ بتادیں کہ اطہر پرویز اور محمد جلال الدین کے قبضے سے برآمد ہونے والی دستاویزات سے ان کے دہشت گردی کے ماڈیول کا پردہ فاش ہوا ہے۔ ان کی تنظیم بھارت مخالف اور ہندو مخالف سرگرمیوں میں ملوث پائی گئی ہے۔ وہ 2047 تک ہندوستان میں ایک اسلامی ملک کے قیام کے مقصد کے ساتھ کام کر رہے تھے۔ دستاویز میں ہندو برادری کے خلاف ان کی زہریلی سوچ کھل کر سامنے آئی ہے۔ یہاں یہ بھی بتانا ضروری ہے کہ راجدھانی پٹنہ کے پھلواری شریف سے گرفتار اطہر پرویز اور جلال الدین کا دہشت گرد تنظیموں سے گٹھ جوڑ تھا۔ اطہر پرویز اور جلال الدین کو پٹنہ پولیس نے آئی بی کے ان پٹ کے بعد ہی گرفتار کیا تھا۔

      محکمہ پولیس سے موصولہ اطلاعات کے مطابق اطہر پرویز اور جلال الدین کو پٹنہ کی بیورو جیل کے خصوصی سیل میں رکھا گیا ہے۔ پٹنہ پولیس کو بیرون ملک سے فنڈنگ ​​ملنے کی اطلاع ملی ہے۔ ان سے ملنے والے شواہد کے مطابق کل 3 گنا رقم ان کے پاس آئی۔ پہلی ٹرانزیکشن 14 لاکھ روپے کی ہے، دوسری 30 لاکھ اور تیسری 40 لاکھ روپے کی ہے۔ ان تمام نکات کی چھان بین کی جا رہی ہے۔ امید کی جا رہی ہے کہ ای ڈی بھی اس معاملے کی جانچ میں شامل ہو گی۔ یہ لوگ مقامی، ضلعی سطح، ریاستی سطح اور قومی سطح کی PFI-RSDPI میٹنگوں میں ایک فعال ممبر کے طور پر حصہ لیتے تھے۔ یہ دونوں فرقہ وارانہ اور ملک دشمن سازشیں کرنے کے کام میں ملوث تھے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: