ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

کھلے میں بٹھا کر امتحان لینے کے معاملے میں پٹنہ ہائی کورٹ نے وزارت دفاع سے جواب مانگا

پٹنہ : پٹنہ ہائی کورٹ نے فوج میں کلرک کی بھرتی کے لیے بہار کے مظفر پورمیں 28 فروری کو منعقد ہ امتحان میں نوجوانوں کو پینٹ، شرٹ اور بنیان اتار کر صرف چڈی میں بٹھانے کے معاملے مکا نوٹس لیتے ہوئے آج وزارت دفاع سے اس معاملے میں جواب مانگا ہے۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Mar 01, 2016 10:46 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کھلے میں بٹھا کر امتحان لینے کے معاملے میں پٹنہ ہائی کورٹ نے وزارت دفاع سے جواب مانگا
پٹنہ : پٹنہ ہائی کورٹ نے فوج میں کلرک کی بھرتی کے لیے بہار کے مظفر پورمیں 28 فروری کو منعقد ہ امتحان میں نوجوانوں کو پینٹ، شرٹ اور بنیان اتار کر صرف چڈی میں بٹھانے کے معاملے مکا نوٹس لیتے ہوئے آج وزارت دفاع سے اس معاملے میں جواب مانگا ہے۔

پٹنہ : پٹنہ ہائی کورٹ نے فوج میں کلرک کی بھرتی کے لیے بہار کے مظفر پورمیں 28 فروری کو منعقد ہ امتحان میں نوجوانوں کو پینٹ، شرٹ اور بنیان اتار کر صرف چڈی میں بٹھانے کے معاملے مکا نوٹس لیتے ہوئے آج وزارت دفاع سے اس معاملے میں جواب مانگا ہے۔

چیف ایگزیکٹو جج اقبال احمد انصاری اور جسٹس چکردھاری شرن سنگھ پر مشتمل بینچ نے ایک مقامی اخبار میں اس سے متعلق تصویر کو دیکھنے کے بعد اسے مفاد عامہ عرضی میں تبدیل کرتے ہوئے آج کیس کی سماعت کی اور وزارت دفاع کو اس معاملے پر جواب دینے کے لئے کہا ہے۔ عدالت نے وزارت دفاع سے یہ پوچھا کہ کون سا ایسا بورڈ ہے جو اس طرح سے امتحان کا اہتمام کر رہا ہے۔

ججوں نے کہا کہ یہ انسان کے وقار کو اس کی مجبوری پر مکمل خودسپردگی کرانے جیسا ہے۔ یہ اور کچھ نہیں، استحصال کی دوسری شکل ہے۔ عدالت میں موجود ایڈیشنل سالیسٹر جنرل، بہار ایس ڈی سنجے نے کہا کہ اس معاملے میں وہ وزارت دفاع کے متعلقہ عہدیدار سے جواب لے کرعدالت کو بتائیں گے- اس معاملے میں اب 5 اپریل کو سماعت ہوگی۔

واضح رہے کہ اتوار کو فوج میں کلرک کی بھرتی کے لئے مظفر پور میں منعقد ہوئے امتحان میں تقریباََ1150 امیدواروں کو کھلے میدان میں پینٹ، شرٹ اور بنیان اتار کر صرف چڈی میں بیٹھ کر تحریری امتحان دینے کا حکم دیا گیا تھا۔مجبوری میں امیدواروں نے ننگے بدن امتحان دیا اور اسی کی تصویر مقامی اخبار کے پہلے صفحے پر شائع ہوئی تھی۔ فوج میں بھرتی بورڈ کے ڈائریکٹر کرنل بی ایس گودھارانے اس سلسلے میں پوچھے جانے پر کہا تھا کہ ان کا پرانا تجربہ برا رہا ہے۔تحریری امتحان میں کوئی گڑ بڑ نہ ہو اور امیدوار نقل نہ کریں اس لئے اس طرح سے امتحان لیا گیا۔

First published: Mar 01, 2016 10:46 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading