ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

شہریت ترمیمی بل 2019: آسام میں احتجاج پر وزیر اعظم مودی نے کیا ٹویٹ، کرائی یہ یقین دہانی

بتا دیں کہ کیب 2019 کی منظوری سے قبل اور اس کے بعد آسام اور شمال۔ مشرق کی ریاستوں میں پرتشدد مظاہرے کئے جا رہے ہیں۔

  • Share this:
شہریت ترمیمی بل 2019: آسام میں احتجاج پر وزیر اعظم مودی نے کیا ٹویٹ، کرائی یہ یقین دہانی
وزیر اعظم نریندر مودی: فائل فوٹو

نئی دہلی۔ شہریت ترمیمی بل 2019 کے پارلیمنٹ سے پاس ہونے کے بعد آسام اور شمال مشرق کی دیگر ریاستوں میں جاری ہنگامہ اور احتجاج کے بعد وزیر اعظم مودی نے ٹویٹ کیا ہے۔ وزیر اعظم نے لوگوں سے کہا ہے کہ سبھی کے حقوق کا تحفظ مرکزی حکومت اور وہ خود کریں گے۔ بتا دیں کہ کیب 2019 کی منظوری سے قبل اور اس کے بعد آسام اور شمال۔ مشرق کی ریاستوں میں پرتشدد مظاہرے کئے جا رہے ہیں۔




شہریت ترمیمی بل کوئز میں حصہ لیں ۔


 

لوک سبھا میں شہریت ترمیمی بل ( سی اے بی ) پیر کو منظور ہوگیا ۔ اس کوئز میں حصہ لے کر اس متنازع بل کے بارے میں اپنی معلومات کا اندازہ لگائیں ۔




شہریت ترمیمی بل کے تحت تبت کے پناہ گزینوں کوملے گی شہریت ؟






 کیا، احمدیہ پناہ گزینوں جوپاکستان میں مذہبی ظلم و ستم کا شکارہوکربھاگ کرآئے انہیں شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت ملے گی؟







کیا، بنگلہ دیش ہندومہاجرجو 2015 میں غیرقانونی طورپرہندوستان میں داخل ہوا ہے اسے شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت مل جائیگی؟





بنگلہ دیش کے ایک بدھسٹ مہاجرجن کا نام آسام کے نیشنل رجسٹرآف سیٹیزنس سے نکال دیاگیاہے اور اس کے خلاف فارین ٹرابیونل میں کیس زیرالتواء ہے تو کیا اسے شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت مل جائیگی؟




میگھالیہ آئین کے چھٹویں شیڈول کے تحت آتاہے اور یہ شہریت ترمیمی بل کے حدود سے باہر ہے تو کیا شیلانگ کے پولیس بازار میں رہنے والے ہندوبنگلہ دیش مہاجر،شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت کےلیے درخواست داخل کرسکتاہے؟





کیا پاکستان سے غیرقانونی طورپر آکرناگا لینڈ کے دیما پور میں رہنے والا مہاجر شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت کے لیے درخواست داخل نہیں کرسکتاہے کیوں کہ ناگا لینڈ میں انرلائن پرمٹ کا نفاذ ہے جو شہریت ترمیمی بل کے حدود سے باہر ہے؟







کیا تریپورہ میں قیام پذیر بنگالی ہندو مہاجرین کو شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت مل سکتی ہے ؟





ہندوستان منتقل ہونے والے ہندو، سکھ، بدھیسٹ، جین، پارسی اور عیسائی مہاجرین جوپاکستان، افغانستان، بنگلہ دیش میں مذہبی ظلم وستم شکار ہوئے ہیں، انہیں شہریت ترمیمی بل کے تحت خود بخود شہریت مل جائیگی ؟




کوئی بھی ہندو مہاجر شہریت ترمیمی بل کے تحت شہریت کا دعویٰ کرسکتاہے؟






بنگلہ دیش کے چکما، ہاجنگ کے پناہ گزین جو اروناچل پریش میں قیام پذیز ہیں اور انہیں اب تک شہریت نہیں ملی ہے تو کیا انہیں شہریت ترمیم بل کے تحت شہریت مل جائیگی؟






کیا سری لنگا سے آنے والے ہندو تامل مہاجرین شہریت ترمیم بل کے تحت ہندوستانی شہریت حاصل کرسکتے ہیں؟





آسامی میں بات کرنے والے ہندو، جو جوہرہاٹ سے تعلق رکھتے ہیں اور انہیں مناسب دستاویزات کی عدم موجودگی کے سبب نیشنل رجسٹرآف سیٹزنس میں شامل نہیں کیاگیاہے؟ کیا وہ شہریت ترمیمی بل کے شہریت کے لیے درخواست داخل کرسکتے ہیں؟

 








 


ان ریاستوں میں ہو رہے مظاہروں پر وزیر اعظم مودی نے ٹویٹ کیا’’ میں آسام کے اپنے بھائیوں اور بہنوں کو یہ یقین دہانی کرانا چاہتا ہوں کہ شہریت ترمیمی بل کے پاس ہونے کے بعد انہیں فکرمند ہونے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ میں انہیں یقین دہانی کرانا چاہتا ہوں کہ ’’ کوئی بھی آپ کے حقوق، منفرد شناخت اور خوبصورت ثقافت کو نہیں چھین سکتا ہے۔ یہ مسلسل پھلتا۔ پھولتا اور فروغ پاتا رہے گا‘‘۔


وزیر اعظم نے کہا کہ ’’ مرکز اور میں شق 6 کی روح کے مطابق آسام کے لوگوں کے سیاسی، لسانی، ثقافتی اور زمینی حقوق کا آئینی طور پر تحفظ کرنے کے تئیں پوری طرح سے پابند عہد ہیں‘‘۔



غور طلب ہے کہ شہریت ترمیمی بل کو لے کر آسام سمیت شمال مشرقی ریاستوں میں زبردست احتجاجی مظاہرے کے درمیان پارلیمنٹ نے بدھ کے روز اس بل کو اپنی منظوری دے دی۔ بل کے حق میں 125 ووٹ پڑے جبکہ اس کی مخالفت میں 105 ووٹ پڑے۔

 
First published: Dec 12, 2019 12:21 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading