ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

لو جہاد قانون کو لیکر بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی نے کہہ دی یہ بڑی بات

بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی نے بھوپال میں لو جہاد کے خلاف دھرنا دیکر عدالت سے رجوع کرنے کا بھی اعلان کردیا ہے۔

  • Share this:
لو جہاد قانون کو لیکر بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی نے کہہ دی یہ بڑی بات
لو جہاد قانون کو لیکر مدھیہ پردیش میں سیاست جاری

لو جہاد قانون کو لیکر مدھیہ پردیش میں سیاست جاری ہے۔ حالانکہ کورونا وائرس وبا کے سبب جب آج سے شروع ہونے والے اسمبلی سیشن کو ملتوی کرنے کا اعلان کیاگیا تو لوگوں نے سوچا کہ اب یہ قانون ٹھنڈے بستے میں گیا، مگر حکومت نے لو جہاد قانون پر آرڈیننس لانے کی بات کہہ کر اپنی منشا کو صاف کردیا۔ وہیں بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی نے بھوپال میں لو جہاد کے خلاف دھرنا دیکر عدالت سے رجوع کرنے کا بھی اعلان کردیا ہے۔ واضح رہے کہ اتر پردیش میں لو جہاد کے خلاف قانون بنائے جانے کے بعد سے ہی مدھیہ پردیش میں بھی حکومت نے لوجہاد کو روکنے کے لئے قانون لانے کا اعلان کردیاتھا۔ پہلے لو جہاد کے خلاف قانون لانے اور پانچ سال تک کی سزا کی بات کہی گئی تھی مگر بی جے پی اراکین اسمبلی کے مطالبہ کے بعد اس میں سزا کی مدت میں توسیع کی گئی اور جب لو جہاد قانون کے مسودے کو وزیر اعلی شیوراج سنگھ کے سامنے پیش کیاگیا تولوجہاد انجام دینے والوں کو دس سال کی سزا کے ساتھ ایک لاکھ تک کاجرمانہ بھی شال کیا گیا۔ چھبیس دسمبر کو لو جہاد کے مجوزہ مسودے کو شیوراج کابینہ کی منظوری ملنے کے بعد اٹھائیس دسمبر سے شروع ہونے والے اسمبلی کے سرمائی اجلاس میں اسے پیش کیا جانا تھا مگر عین اسمبلی سیشن سے پہلے اسمبلی سکریٹریٹ کے ستہتر ملازمین میں سے انسٹھ ملازمین کی رپورٹ کورونا پازیٹو آنے اور مختلف پارٹیوں کے دس ممبران اسمبلی کی رپورٹ کورونا پازیٹو آنے کے بعد کل جماعتی میٹنگ میں اتفاق رائے سے اسمبلی سیشن کو ملتوی کرنے کا فیصلہ کیاگیا۔

مدھیہ پردیش کے وزیر برائے پارلیمانی امور وزیر داخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا کہتے ہیں کہ کورونا قہر کے سبب کل جماعتی میٹنگ میں اسمبلی کو ملتوی کرنے کا فیصلہ کیاگیاہے۔ اب سیدھے بجٹ سیشن سے اسمبلی کا آغاز ہوگا۔جہاں تک لو جہاد قانون کا سوال ہے تو حکومت اپنے موقف پر قائم ہے اور اب لو جہاد کو لیکر حکومت آرڈیننس لائے گی ۔ لوکے نام پر مدھیہ پردیش میں کوئی جہاد نہیں ہونے دیا جائے گا۔ سخت قانون کو لاکر نہ صرف اس کوروکنے کا کام ہوگا بلکہ جو لوگ یا تنظیمیں اس میں ملوث ہونگی ان کو بھی سزا دی جائے گی۔


وہیں بھارتیہ کمیونسٹ لو جہاد کے نام پر حکومت کے ذریعہ لائے جانے والے مذہبی آزادی قانون کو آئین کی خلاف ورزی سے تعبیر کرتی ہے ۔مدھیہ پردیش حکومت کے موقف کے خلاف بھوپال میں بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی نے چند شیکھر آزاد کے مجسمے کے پاس دھرنا دیکر حکومت سے لو جہاد قانون کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی مدھیہ پردیش کے سکریٹری شیلندر شیلی کہتے ہیں کہ ہم نے ایم پی حکومت کے لو جہاد قانون کے خلاف دھرنا دیکر مدھیہ پردیش کی گورنر کو میمورنڈم پیش کیا ہے اور ان سے مطالبہ کیا ہے کہ اس قانون کو واپس لیا جائے ۔ ساتھ ہی اس معاملے کو لیکر ہم صدر جہوریہ ہندکو بھی میمورنڈم پیش کریں گے ۔حکومت پہلے اسمبلی میں بل لانے کی بات کر رہی تھی مگر اسمبلی سیشن ملتوی ہوجانے کے بعد اب اس نے لو جہاد کے خلاف آرڈیننس لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت اگر لو جہاد قانون سے اپنا قدم واپس نہیں لیتی ہے تو بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی اس معاملے کو لیکر عدالت سے رجوع کریگی ۔ یہ قانون نہ صرف آئین کی خلاف ورزی ہے بلکہ خواتین کی آزادی پر بھی اس سے حرف آتا ہے جسے کسی بھی صورت میں قبول نہیں کیاجا سکتا ہے۔


نوٹ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۱۔
ایک نمبر سے تین نمبر تک لو جہاد کے خلاف بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی کے دھرنے کا مختلف زاویوں سے فوٹو
۲۔
چار نمبر سےمدھیہ پردیش اسمبلی کا باہری فوٹو
۳۔
بھارتیہ کمیونسٹ ایم پی کے سکریٹری شیلندر شیلی کا پانچ نمبر سے فوٹو
۴۔
ایم پی وزیر داخلہ ڈاکٹر نروتم مشرا کا چھ نمبر کا فوٹو
Published by: sana Naeem
First published: Dec 28, 2020 12:10 PM IST