ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

شہریت ترمیمی قانون کے خلاف اب اس انوکھے انداز میں کولکاتہ میں کیا گیا احتجاج

کولکاتہ کے پارک سرکس میدان پہنچ کر وسیم کپور نے خواتین کے احتجاج کی حمایت کرتے ہوٸے پینٹنگ بنائی ۔

  • Share this:
شہریت ترمیمی قانون کے خلاف اب اس انوکھے انداز میں کولکاتہ میں کیا گیا احتجاج
شہریت ترمیمی قانون کے خلاف اب اس انوکھے انداز میں کولکاتہ میں کیا گیا احتجاج

کولکاتہ کے پارک سرکس میدان میں خواتین کا احتجاجی دھرنا جاری ہے ۔ سی اے اے اور این ار سی کے خلاف خواتین کے احتجاجی دھرنے میں پینٹینگ بنا کر مشہور مصور وسیم کپور نے نو این ار سی و سی اے اے اور نو این پی ار کا نعرہ بلند کیا ۔ وسیم کپور سمیت دیگر مصوروں نے پینٹنگ کے ذریعہ اپنا احتجاج درج کرایا ۔ وسیم کپور نے این ار سی کو ملک کے عوام کے خلاف بتاتے ہوٸے احتجاج جاری رکھنے کا ارادہ بھی ظاہرکیا ۔ کولکاتہ کے پارک سرکس میدان پہنچ کر وسیم کپور نے خواتین کے احتجاج کی حمایت کرتے ہوٸے پینٹنگ بنائی ۔ انہوں نے اس پینٹینگ پر دستخطی مہم شروع کرنے کا ارادہ ظاہر کرتے ہوٸے کہا کہ اس پینٹینگ کو صدر جمہوریہ اور وزیر داخلہ کو بھیجا جائے گا ۔

وہیں سابق ممبر پارلیمنٹ محمد سلیم نے بھی پارک سرکس میدان پہنچ کر خواتین کے دھرنے کی حمایت کی ۔ مرکز کی جانب سے بناٸے گٸے شہریت ترمیمی قانون کو عوام دشمن بتاتے ہوٸے انہوں نے کہا کہ اس قانون سے صرف ایک خاص طبقہ کو خوفزدہ کرنے کی کوشش ہی نہیں کی گٸی ، بلکہ یہ ہر ہندوستانی کو کٹگھرے میں کھڑا کرنے کی ایک کوشش ہے ۔


وسیم کپور نے این ار سی کو ملک کے عوام کے خلاف بتاتے ہوٸے احتجاج جاری رکھنے کا ارادہ بھی ظاہرکیا ۔ تصویر : شبانہ جاوید ۔
وسیم کپور نے این ار سی کو ملک کے عوام کے خلاف بتاتے ہوٸے احتجاج جاری رکھنے کا ارادہ بھی ظاہرکیا ۔ تصویر : شبانہ جاوید ۔


انہوں نے کاغذ نہ دکھانا ہے کے نعرے کو مضبوط بنانے کی عوام سے اپیل کرتے ہوٸے ملک بھر میں احتجاج جاری رکھنے پر زور دیا ۔ محمد سلیم نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ یہ منچ کسی سیاسی جماعت کا نہیں ہے ، بلکہ یہ ایک عوامی تحریک ہے ، جسے سیاست سے دور رکھنے کی ضرورت ہے ۔
First published: Feb 14, 2020 10:15 PM IST