உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بینک میں گھسے بدمعاشوں نے اسلحہ لہراتے ہوئے 10منٹ میں لوٹے 29لاکھ روپے، آس۔پاس لوگوں کو ذرا نہ لگی بھنک

     لٹیروں نے صرف 10 منٹ میں کو آپریٹو بینک سے 29 لاکھ روپے لوٹے اور فرار ہو گئے۔ آس پاس کے لوگوں کو لاکھوں روپے کی اس لوٹ کا علم تک نہیں تھا۔

    لٹیروں نے صرف 10 منٹ میں کو آپریٹو بینک سے 29 لاکھ روپے لوٹے اور فرار ہو گئے۔ آس پاس کے لوگوں کو لاکھوں روپے کی اس لوٹ کا علم تک نہیں تھا۔

    لٹیروں نے صرف 10 منٹ میں کو آپریٹو بینک سے 29 لاکھ روپے لوٹے اور فرار ہو گئے۔ آس پاس کے لوگوں کو لاکھوں روپے کی اس لوٹ کا علم تک نہیں تھا۔

    • Share this:
      سلطان گنج: بہار کے بھاگلپور ضلع میں بینک لوٹ کا ایک بڑا سنسنی خیز واقعہ سامنے آیا ہے۔ ضلع کے سلطان گنج تھانہ علاقے میں واقع بھاگلپور سینٹرل کو آپریٹو بینک سے دن کی روشنی میں لاکھوں روپے لوٹ لیے گئے۔ لٹیروں نے صرف 10 منٹ میں کو آپریٹو بینک سے 29 لاکھ روپے لوٹے اور فرار ہو گئے۔ آس پاس کے لوگوں کو لاکھوں روپے کی اس لوٹ کا علم تک نہیں تھا۔ اطلاع ملتے ہی مقامی پولیس موقع پر پہنچ گئی اور معاملے کی تحقیقات شروع کر دی۔
      معلومات کے مطابق یہ ڈکیتی جمعرات کو دن کی روشنی میں بھاگلپور سینٹرل کو آپریٹو بینک میں انجام دی گئی تھی جو سلطان گنج تھانہ علاقہ میں اسٹیشن روڈ پر واقع بند پڑے سرکاری بس اڈے کے احاطے میں ہے ۔ بدمعاشوں نے ہتھیار کے زور پر 29 لاکھ روپے سے زائد لوٹ پیسے لیے۔ جمعرات کی رات ڈھائی بجے کے قریب ڈکیتی کرنے کے بعد تمام بدمعاش آسانی سے چلے گئے۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ اتنا بڑا واقعہ پیش آگیا لیکن آس پاس کے لوگوں کو اس کے بارے میں ذرا بھی بھنک تک نہیں لگی۔
      بینک کی برانچ منیجر سنیتا چودھری نے لوٹ کی تصدیق کرتے ہوئے 'ہندوستان اخبار' کو بتایا کہ بدمعاش 5 سے 6 کی تعداد میں تھے۔ ان سب کے چہروں پر کالے رنگ کے ماسک تھے۔ انہوں نے بتایا کہ بدمعاش اسلحہ لہراتے ہوئے بینک میں داخل ہوئے۔ اس وقت ایک اور ملازم کیشیئر اجے کمار جھا کو اسلحہ کے زور پر بدمعاشوں نے اپنے قبضے میں لے لیا۔ اس دوران بدمعاشوں نے کیشیئر کی پٹائی بھی کی۔ اس میں انہیں چوٹیں آئی ہیں۔ بدمعاشوں نے کیش کاؤنٹر میں رکھی ہوئی رقم نکال لی اور ہاتھوں میں اسلحہ لہراتے ہوئے فرار ہوگئے۔

      واقعہ کی اطلاع پر صدر ڈی ایس پی ڈاکٹر گورو کمار اور ایس ایچ او موقع پر پہنچ گئے۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کہ پولیس مشکوک مقامات پر چھاپے مار رہی ہے تاکہ واقعہ میں ملوث بدمعاشوں کی شناخت اور گرفتاری کی جاسکے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: