ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار میں کورونا سے اب تک 1034 لوگوں کی موت، عام سے لیکر خاص ہو رہے ہیں شکار

الیکشن کمیشن کی جانب سے انتخابی جلسوں میں سخت رہنما خطوط پر عمل کرنے کی ہدایت دی گئی ہے لیکن انتخابی جلسوں میں محض 30 فیصد لوگ ہی ماسک لگا کر پہنچتے ہیں۔ وہیں سوشل ڈسٹینسنگ نام کی کوئی چیز انتخابی اجلاس میں نظر ہی نہیں آتی ہے۔

  • Share this:
بہار میں کورونا سے اب تک 1034 لوگوں کی موت، عام سے لیکر خاص ہو رہے ہیں شکار
علامتی تصویر

پٹنہ۔ ایک طرف بہار اسمبلی انتخابات کو لیکر روزانہ انتخابی اجلاس منعقد ہورہا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر اعلی نتیش کمار سے لیکر راہل گاندھی، تیجسوی یادو  اور دیگر تمام سیاسی لیڈران اپنے اپنے امیدواروں کو جیت دلانے کے لئے عوام سے ووٹ مانگ رہے ہیں تو وہیں کوروناوائرس بھی اپنی رفتار سے آگے بڑھ رہا ہے۔


الیکشن کمیشن کی جانب سے انتخابی جلسوں میں سخت رہنما خطوط پر عمل کرنے کی ہدایت دی گئی ہے لیکن انتخابی جلسوں میں محض 30 فیصد لوگ ہی ماسک لگا کر پہنچتے ہیں۔ وہیں سوشل ڈسٹینسنگ نام کی کوئی چیز انتخابی اجلاس میں نظر ہی نہیں آتی ہے۔ بہار میں کورونا متاثرین کی مجموعی تعداد دو لاکھ دس ہزار 389 ہوگئی ہے۔ ریاست میں کورونا وبا سے اب تک ایک ہزار 34 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔ ابھی کورونا کے قریب گیارہ ہزار ایکٹیو کیس ہیں۔ صرف پٹنہ ضلع میں 34 ہزار 55 لوگ کورونا سے متاثر ہو چکے ہیں۔ پٹنہ ضلع میں دو ہزار پانچ سو بتیس ایکٹیو کیسیز ہیں۔ کورونا سے پٹنہ میں دو سو 56 لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔


حالات یہ ہیں کہ صوبہ کے نائب وزیر اعلی سشیل کمار مودی کورونا کے سبب پٹنہ ایمس میں زیرعلاج ہیں۔ ایم پی وجئے کمار، بی جے پی لیڈر شاہنواز حسین سمیت کئی سیاسی لیڈر یا تو پٹنہ ایمس میں بھرتی ہیں یا پھر کوارنٹین ہیں۔ کورونا کے اس خطرناک حالات میں بہار اسمبلی کا الیکشن انتظامیہ کے لئے ایک چیلنج بنا ہوا ہے۔ یہی سبب ہے کہ لوگوں سے انتخابی اجلاس، جلسے، ریلی اور انتخابی تشہیر کے وقت انسانی دوری بنانے سمیت کورونا کی گائڈ لائنس پر مکمل عمل کرنے کی اپیل کی جارہی ہے۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Oct 24, 2020 08:39 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading