Choose Municipal Ward
    CLICK HERE FOR DETAILED RESULTS
    ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

    کلکتہ کی رہنے والی خاتون کا افغانستان کے کابل میں اغوا، سشما سوراج کی رہائی کیلئے ہر ممکن مدد کی یقین دہانی

    کلکتہ : کلکتہ شہر کی رہنے والی ایک خاتونڈتھ ڈی سوزا (40) جو این بین الاقوامی تنظیم کے ساتھ کام کرتی تھی کا افعانستان کے دارالحکومت کابل میں اغوا ہو گیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated: Jun 10, 2016 10:14 PM IST
    • Share this:
    • author image
      NEWS18-Urdu
    کلکتہ کی رہنے والی خاتون کا افغانستان کے کابل میں اغوا، سشما سوراج کی رہائی کیلئے ہر ممکن مدد کی یقین دہانی
    کلکتہ : کلکتہ شہر کی رہنے والی ایک خاتونڈتھ ڈی سوزا (40) جو این بین الاقوامی تنظیم کے ساتھ کام کرتی تھی کا افعانستان کے دارالحکومت کابل میں اغوا ہو گیا ہے۔

    کلکتہ : کلکتہ شہر کی رہنے والی ایک خاتونڈتھ ڈی سوزا (40) جو این بین الاقوامی تنظیم کے ساتھ کام کرتی تھی کا افعانستان کے دارالحکومت کابل میں اغوا ہو گیا ہے۔ وہ مرکزی کلکتہ کے انٹالی کے سی آئی ٹی روڈ کی رہنے والی ہے ۔اپنی تعلیم مکمل کرنے کے بعد وہ کابل میں آغا خان فاؤنڈیشن میں سینئر ٹیکنیکل ایڈوائزر کے طور پر کام کر رہی تھیں۔ڈی سوزا آغاخان فاؤنڈیشن میں ہی بنگلہ دیش، نیپال، بھوٹان، ماریشس اور سری لنکا میں کام کرنے کے بعد کچھ ماہ سے کابل میں کام کر رہی تھیں۔ڈی سوزا کا کل دیر رات نامعلوم افراد نے اغوا کرلیا ۔

    کابل میں اس کے ساتھ کام کرنے والے ساتھیوں نے جمعرات کی رات کو اس کے اغوا کی خبر خاندان کو دی ہے ۔ ذرائع کے مطابق ساتھ میں کام کرنے والوں نے مغوی خاتون کے اہل خانہ کو بتایا کہ جمعرات کی دیر رات کو کابل کے تامن علاقے سے نامعلوم افراد نے جوڈتھ ڈی سوزا کا اغوا کیا گیا ہے ۔ اس کا اغوا کیوں کیا گیا اور انہیں کہاں لے جایا گیا ہے اس کا پتہ نہیں چل سکا ہے۔اغوا کی خبر ملنے کے بعد سے ہی کلکتہ میں اس کے اہل خانہ پریشان ہیں اور سینئر افسران کے ساتھ رابطہ قائم کیا جارہا ہے ۔160ڈی سوزا کے اہل خانہ نے ہندوستان اور افغان انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ ان کی بیٹی کی رہائی کیلئے تیزی سے اقدامات کریں ۔وہ اسی ہفتہ کابل سے کلکتہ آنے والی تھیں ۔مغوی خاتون کی بہن اگنیش ڈی سوزا نے کہا کہ ہم جانتے ہیں اغوا کا یہ واقعہ ایک ایسے ملک میں واقع ہوا ہے جو جنگ زدہ ہے اس لیے رہائی مشکل ہے ۔ان کی بہن افغانستان جاکر کام کرنے کی خواہش مند تھیں ۔مجھے امید ہے کہ حکومت ہند میری بہن کی رہائی کیلئے کارروائی کرے گی اور میری بہن واپس لائے گی۔

    دریں اثناء مرکزی وزیر خارجہ سشما سوراج نے ڈ یسوزاکے اغوا ہونے پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے واپسی کیلئے ہر ممکن کوشش کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے ۔ ششما سوراج نے ٹوئیٹ کرکے کہا کہ وہ صرف آپ کی بہن اور بیٹی نہیں ہے بلکہ یہ ملک کی بیٹی اور بہن ہے اور اس کی رہائی کیلئے ہر ممکن کوشش کریں گے ۔کابل میں تعینات ہندوستانی سفارتخانے کے اہلکار مسلسل افغان انتظامیہ اور وہاں کے پولیس حکام سے رابطہ میں ہیں۔ وزارت خارجہ کے اہلکار ڈی سوزا کے خاندان سے مسلسل رابطے میں ہیں۔کسی بھی قسم کی معلومات یا کوئی اطلاع ملنے پر ان کے خاندان کو اس سے آگاہ کیا جا رہا ہے۔ جوڈتھ ڈی سوزا کی بہن کے ساتھ بھی دہلی کے سینئر افسر مسلسل رابطہ میں ہیں۔

    کلکتہ شہر کے انٹالی علاقے سی آئی ٹی روڈ میں رہنے والے جوڈتھ ڈی سوزا کے والد ڈنجل ڈی سوزا نے بتایا کہ وزارت خارجہ کی یقین دہانی اور ان کی سنجیدگی سے وہ مطمئن ہیں اور انہیں یقین ہے کہ وزارت خارجہ ان کی بیٹی کو رہاکرانے میں کامیاب ہوجائے گی۔160مرکزی وزیر خارجہ سشما سوراج نے انہیں اس معاملے میں فون کیا تھا۔ انہیں امید ہے کہ جلد ان کی بیٹی گھر واپل لوٹ آئے گی۔اس کا اغوا کیوں اور کس مقصد کے لئے کیا گیا تھا، اس کے بعد ہی اس کا پتہ چل سکے گا۔ والد نے کہا کہ اس کی بیٹی بہت ہی بہادر ہے ۔ہم لوگ اس کے افغانستان جانے کی وجہ سے خوف زدہ تھے مگر وہ جہاں کر لوگوں کیلئے کام کرنے کی خواہش مند تھیں ۔

    آغان خان ڈیو لپمنٹ فاؤنڈیشن تعلیم، صحت پر دیہی علاقوں میں کام کرتے ہے ۔ڈی سوزا کی بہن اس اغوا میں طالبان کے ملوث ہونے کے شبہ پر کہا کہ انہیں نہیں معلوم ہے کہ کس نے اغوا کیا ہے ۔

    First published: Jun 10, 2016 10:14 PM IST
    corona virus btn
    corona virus btn
    Loading