ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار میں لالو پرساد کی وراثت کو نہیں سنبھال پارہے ہیں تیجسوی یادو، آرجےڈی کے لیڈروں کو ستا رہی ہے لالو کی کمی

خاص بات یہ ہیکہ تیجسوی، لالو نہیں بن سکے اور لالو کی وراثت کو سنبھال پانے میں وہ ناکام رہ گئے ہیں۔ اس کی تازہ مثال رگھوونش پرساد سنگھ ہیں۔ تین مہینہ سے رگھوونش پرساد سنگھ پارٹی سے ناراض تھے لیکن تیجسوی یادو نے ان کی ناراضگی کو دور کرنے کے بجائے ان کے مسئلہ پر بات تک کرنا ضروری نہیں سمجھا۔

  • Share this:
بہار میں لالو پرساد کی وراثت کو نہیں سنبھال پارہے ہیں تیجسوی یادو، آرجےڈی کے لیڈروں کو ستا رہی ہے لالو کی کمی
بہار میں لالو پرساد کی وراثت کو نہیں سنبھال پارہے ہیں تیجسوی یادو

پٹنہ۔ تین دہائیوں سے بہار کی سیاست میں لالو پرساد کا دبدبہ رہا ہے۔ لالو پرساد حکومت میں رہے ہوں یا حکومت سے باہر لیکن بہار کی سیاست میں لالو کی گونج ہمیشہ سنائی دیتی رہی ہے۔ لالو پرساد نے بہار کو اپنے انداز میں چلایا ہے اور منفرد طریقہ سے سیاست کی ہے۔ لالو پرساد نے صوبہ کے پچھڑے، غریب اور سماج کے آخری پائدان پر کھڑی آبادی کو بھی سیاست میں لاکر ایک الگ مقام دلایا تو بہار کے لوگوں کے دلوں پر لگاتار راج کرتے رہے۔


ایک وقت تھا جب لالو کے اشارہ پر سیاسی رہنما اپنے حلقے سے جیت جاتے تھے۔ ایم وائی کا اتحاد بنا کر لالو پرساد مسلمانوں کے بھی لیڈر بن گئے۔ حالت یہ ہو گئی کہ مسلم سماج کے فیصلوں میں بھی لالو کا ہی پورا دخل ہونے لگا۔ 2005 میں بہار کی سیاست نے کروٹ بدلی اور نتیش کمار بہار کے وزیر اعلیٰ بن گئے۔ اقتدار سے باہر رہنے کے باوجود لالو یادو بہار کے عوامی لیڈر بنے رہے۔ گزشتہ دو سال پہلے لالو پرساد کو جیل ہو گئی اور تب سے پارٹی کی کمان لالو پرساد کے بیٹے تیجسوی یادو سنبھال رہے ہیں۔ لالو رانچی میں ہیں اور پارٹی کے قومی صدر کا عہدہ ان کے پاس ہی ہے لیکن پارٹی کو اب تیجسوی چلا رہے ہیں۔


خاص بات یہ ہیکہ تیجسوی، لالو نہیں بن سکے اور لالو کی وراثت کو سنبھال پانے میں وہ ناکام رہ گئے ہیں۔ اس کی تازہ مثال رگھوونش پرساد سنگھ ہیں۔ تین مہینہ سے رگھوونش پرساد سنگھ پارٹی سے ناراض تھے لیکن تیجسوی یادو نے ان کی ناراضگی کو دور کرنے کے بجائے ان کے مسئلہ پر بات تک کرنا ضروری نہیں سمجھا۔ رگھوونش پرساد اب اس دنیا میں نہیں ہیں تو ان کے چاہنے والے پارٹی پر سوال بھی کھڑا کررہے ہیں۔ آرجےڈی میں دھیرے دھیرے لالو پرساد کے تمام قریبی لوگ حاشیہ پر لاکر کھڑا کردئیے گئے ہیں۔


جانکاروں کے مطابق یہ مسئلہ پارٹی کو اندر سے کمزور کررہا ہے جس کا اثر آئندہ کے انتخابات پر پڑے گا۔ فی الحال یہ پہلی بار ہورہا ہے کہ لالو پرساد یادو بہار کے اسمبلی انتخابات کے وقت سیاست کے مرکز میں نہیں ہیں۔ اب یہ تیجسوی کے لئے بھی امتحان ہوگا کہ اس بار کا اسمبلی انتخاب آرجےڈی کو کتنی کامیابی دلا پاتا ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 15, 2020 06:16 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading