ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

ترنمول لیڈران کو بی جے پی میں شامل کرنے سے بی جے پی قیادت کو کرنا پڑ رہا ہے تنقید کا سامناترنمول لیڈران کو بی جے پی میں شامل کرنے سے بی جے پی قیادت کو کرنا پڑ رہا ہے تنقید کا سامنا

بنگال اسمبلی الیکشن سے پہلے مدعوں سے زیادہ ترنمول پارٹی میں مچی بھگدڑ اور بی جے پی میں ان کی شمولیت بحث کا موضوع ہے۔ ترنمول کے باغی لیڈران کو نہ صرف بی جے پی کا پرچم تھمایا جارہا ہے بلکہ انہیں زیڈ پلس سیکورٹی و دیگر سہولیات بھی فراہم کی جارہی ہے ایسے میں جہاں ترنمول کانگریس کو تنقید کا سامنا ہے۔

  • Share this:
ترنمول لیڈران کو بی جے پی میں شامل کرنے سے بی جے پی قیادت کو کرنا پڑ رہا ہے تنقید کا سامناترنمول لیڈران کو بی جے پی میں شامل کرنے سے بی جے پی قیادت کو کرنا پڑ رہا ہے تنقید کا سامنا
بنگال اسمبلی الیکشن سے پہلے مدعوں سے زیادہ ترنمول پارٹی میں مچی بھگدڑ اور بی جے پی میں ان کی شمولیت بحث کا موضوع ہے۔ ت

بنگال اسمبلی الیکشن سے پہلے مدعوں سے زیادہ ترنمول پارٹی میں مچی بھگدڑ اور بی جے پی میں ان کی شمولیت بحث کا موضوع ہے۔ ترنمول کے باغی لیڈران کو نہ صرف بی جے پی کا پرچم تھمایا جارہا ہے بلکہ انہیں زیڈ پلس سیکورٹی و دیگر سہولیات بھی فراہم کی جارہی ہے ایسے میں جہاں ترنمول کانگریس کو تنقید کا سامنا ہے۔ وہیں بی جے پی بھی سوالوں کے گھیرے میں ہے۔ سب سے بڑا سوال یہ ہے کہ کیا بی جے پی کو جیت حاصل کرنے کے لئے ترنمول لیڈران کے چہرے کی ضرورت ہے ؟ اور اگر ممتا بنرجی پر تنقید کی جارہی ہے تو انکے سپاہی قابل اعتماد کیسے ہیں ؟ ان سوالوں سے پریشان بی جے پی نے نئی حکمت عملی اپنائی ہے۔


بی جے پی نے اعلان کیا ہے کہ ترنمول کے ہر لیڈر کو اب بی جے پی ويلکم نہیں کرے گی۔ترنمول کانگریس کے لیڈروں کو بی جے پی میں شامل کرنے کی مہم پر تبصرہ کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر کیلاش وجے ورگیہ نے کہا کہ بی جے پی کو ترنمول کانگریس کی بی ٹیم بننے نہیں دیا جائے گا۔ انہو ں نے کہا کہ اندھا دھند طور پر ترنمول کانگریس کے لیڈروں کو بی جے پی میں شامل نہیں کیا جائے گا بلکہ اس کے لئے پارٹی سطح پر تفتیش کی جائے گی اور اس کے بعد ہی کسی کو پارٹی میں شامل کیا جائے گا۔


بی جے پی کے قومی جنرل سکریٹری کیلاش وجئے ورگیہ نے کہا کہ ہم ان کو اپنی پارٹی میں شامل نہیں کرنا چاہتے جو بدعنوانی، غیر اخلاقی یا غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔ بی جے پی کے فیصلے پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے ترنمول کے ترجمان و ممبر پارلیمنٹ سوگتا رائے نے کہا کہ بی جے پی الجھن کا شکار ہے ریاست میں بی جے پی کے پاس نہ ہی کوئی لیڈر ہے اور نہ ہی کوئی چہرہ۔ اسی لئے وہ دوسری جماعتوں کے لیڈروں کو پارٹی میں شامل کررہے ہیں ۔



 اسمبلی الیکشن سے پہلے ترنمول لیڈران کو بی جے پی میں شامل کرنے سے بی جے پی قیادت کو کرنا پڑ رہا ہے تنقید کا سامنا۔

Published by: Sana Naeem
First published: Feb 03, 2021 03:51 PM IST