ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بہار کے نجی مدارس مالی بحران کے شکار، لاک ڈاؤن کے سبب ہزاروں مدرسے بند ہونے کی کگار پر

اگر مدرسوں کی مالی حالت ٹھیک نہیں کی گئی تو آنے والے دنوں میں حالات مزید ناگفتہ بہ ہو جائیں گے۔

  • Share this:
بہار کے نجی مدارس مالی بحران کے شکار، لاک ڈاؤن کے سبب ہزاروں مدرسے بند ہونے کی کگار پر
بہار کے نجی مدارس مالی بحران کے شکار، لاک ڈاؤن کے سبب ہزاروں مدرسے بند ہونے کی کگار پر

لاک ڈاؤن اور کورونا کے سبب بہار کے مدرسوں کی مالی حالت بیحد خراب ہو گئی ہے۔ رمضان کے مہینہ میں بھی مدرسوں کو مالی تعاون نہیں مل سکا اور موجودہ وقت میں بھی لوگوں کی جانب سے مدارس کو مالی تعاون نہیں مل رہا ہے۔ اوپر سے سیلاب آنے کے بعد مدرسوں کی مشکلیں اور بڑھ گئی ہیں۔ واضح رہیکہ ریاست میں قریب دس ہزار ایسے مدرسے ہیں جو پوری طرح سے لوگوں کے چندے پر چلتے ہیں۔ اس کے علاوہ مکاتب ہیں اور مکاتب کی حالت اور بھی خراب ہے۔


دراصل مغربی چمپارن، مشرقی چمپارن، شیوہر، سیتامڑی، سیوان، گوپال گنج، دربھنگہ، مدھوبنی، سوپول، ارریہ، کٹیہار، پورنیہ اور کشن گنج میں سب سے زیادہ مدرسوں کی تعداد ہے۔ اور یہ وہی اضلاع ہیں جہاں سیلاب تباہی مچا رہا ہے۔ ماہرین تعلیم کے مطابق مدرسہ پہلے سے ہی مالی دشواریوں کا سامنا کررہے تھے اوپر سے سیلاب نے رہی سہی کسر پوری کردی ہے۔ آل بہار مدرسہ شکچھک سنگھ کے ریاستی صدر مولانا عمران عالم کے مطابق ہزاروں مدرسہ بند ہونے کی کگار پر ہیں۔ اگر وقت رہتے اہل خیر حضرات نے مدرسوں پر توجہ نہیں دی تو مدارس کا تعلیمی نظام درہم برہم ہو جائےگا۔ وہیں امارت شرعیہ بہار نے بھی مدرسوں کی اس صورت حال پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔


امارت کے نائب ناظم مولانا مفتی ثناءالہدیٰ قاسمی کے مطابق مدرسوں کا ایک سال کا ایک بجٹ ہوتا ہے لیکن زیادہ تر مدرسوں میں بجٹ کے اعتبار سے رقم نہیں ہے، نتیجہ کے طور پر تدریسی اور غیر تدریسی ملازمین کے ساتھ ہی طلباء کی مشکلیں کافی بڑھ گئی ہیں۔ مالی کمزوری مدرسوں کے نظام کو خراب کرنے کے لئے کافی ہے۔ مولانا مفتی ثناءالہدیٰ قاسمی نے کہا کہ مدرسوں میں آن لائن تعلیم کا بھی انتظام ہونا چاہئے اور جو لوگ مدرسوں کو تعاون کرتے ہیں یا جن کے سبب مدرسوں کی زندگی پٹری پر رہتی ہے انہیں اب ہر حال میں مدارس کے مسئلہ پر توجہ دینی چاہئے۔ غورطلب ہیکہ حکومت محض ملحقہ مدرسوں کو گرانٹ دیتی ہے لیکن زیادہ تعداد نجی مدرسوں کی ہے جہاں تعلیم کا بول بالا ہے۔ اگر ان مدرسوں کی مالی حالت ٹھیک نہیں کی گئی تو آنے والے دنوں میں حالات مزید ناگفتہ بہ ہو جائیں گے۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Aug 10, 2020 04:17 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading