ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

شوبھندو ادھیکاری نے ترنمول کانگریس کو جھٹکا دیا، پارٹی کے ساتھ کام کرنا مشکل بتایا

شوبھندو ادھیکاری کو منانے کی کوشش ایک بار پھر ناکام ہوتی ہوئی نظر آرہی ہے۔ ذرائع کے مطابق ادھیکاری نے کل کی طویل ملاقات کے بعد آج ترنملو کانگریس کے سینئر ممبر پارلیمنٹ سوگت رائے کو ایس ایم ایس بھیج کر کہا ہے کہ ’’مجھے معاف کردیں ساتھ میں کام کرنا اب ممکن نہیں ہے‘‘۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 02, 2020 11:21 PM IST
  • Share this:
شوبھندو ادھیکاری نے ترنمول کانگریس کو جھٹکا دیا، پارٹی کے ساتھ کام کرنا مشکل بتایا
شوبھندو ادھیکاری نے ترنمول کانگریس کو جھٹکا دیا، پارٹی کے ساتھ کام کرنا مشکل بتایا

کولکاتا: شوبھندو ادھیکاری کو منانے کی کوشش ایک بار پھر ناکام ہوتی ہوئی نظر آرہی ہے۔ ذرائع کے مطابق ادھیکاری نے کل کی طویل ملاقات کے بعد آج ترنمول کانگریس کے سینئر ممبر پارلیمنٹ سوگت رائے کو ایس ایم ایس بھیج کر کہا ہے کہ ’’مجھے معاف کردیں ساتھ میں کام کرنا اب ممکن نہیں ہے‘‘۔ شوبھندو ادھیکاری کے ذرائع کے مطابق اتوار کو وہ پریس کانفرنس کرکے اپنی پوزیشن واضح کریں گے۔ خیال رہے کہ شوبھندو ادھیکاری کے ساتھ کل رات ترنمول کانگریس کے تین سینئرلیڈران سوگت رائے، سدیپ بندو پادھیائے، ابھیشک بنرجی اور حکمت عملی کار پرشانت کشور نے کولکاتا میں شوبھندو ادھیکاری کے ساتھ میٹنگ کی تھی۔ 


اس میٹنگ کے بعد سوگت رائے نے دعویٰ کیا تھا کہ شوبھندو ادھیکاری کے ساتھ تمام مسائل حل ہوچکے ہیں اور کوئی اختلاف نہیں ہے، مگر آج شام شوبھندو ادھیکاری کے ذرائع نے بتایا کہ ابھی تمام مسائل حل نہیں ہوئے ہیں۔ ادھیکاری کا اب ترنمول کانگریس کے ساتھ کام کرنا ممکن نہیں ہے۔ اتوار کو وہ پریس کانفرنس کرکے اپنی پوزیشن واضح کریں گے۔ خیال رہے کہ شوبھندو ادھیکاری کے گڑھ مشرقی مدنی پور میں ممتا بنرجی 7 دسمبر کو دورہ کریں گی۔ اس سے قبل شوبھندو ادھیکاری اپنی پوزیشن واضح کردیں گے۔

میٹنگ کے دوران ممتا بنرجی نے شوبھندو ادھیکاری کے ساتھ فون پر بات بھی کی ہے۔ اس کے بعد ہی سوگت رائے نے تمام مسائل کے حل ہونے کا دعویٰ کیا تھا، مگراب شوبھندو نے سوگت رائے سے کہا کہ ’’مل کر کام کرنا مشکل ہے، مجھے افسوس ہے’۔ ابھی تک میرا مسئلہ حل نہیں ہوا ہے۔ مجھ پر بغیر کسی حل کے سب کچھ مسلط کیا جارہا ہے۔ مجھے 6 دسمبر کو پریس کانفرنس کرنی تھی۔ اس کا اعلان پریس کانفرنس میں ہونا تھا، لیکن اس سے پہلے ہی میڈیا میں مسائل کے حل ہونے کا دعویٰ کردیا گیا ہے۔ اس کی وجہ سے میں نے ساتھ میں کام نہیں کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

شوبھندو ادھیکاری کا پیغام ملنے کے بعدسوگت رائے نے کہا کہ مجھے ان کا پیغام ملاہے۔ میں نے ایمانداری کے ساتھ آپ کو بتایا کہ کل کی میٹنگ میں کیا ہوا۔ اگر شوبھندو ادھیکاری نے اپنا ذہن بدل لیا ہے تو یہ ان کا فیصلہ ہے۔ میں اس سے زیادہ کچھ نہیں کہوں گا۔ دوسری جانب اس سیاسی پیش رفت پر بی جے پی نے خوشی کا اظہار کیا ہے۔ بی جے پی کے ریاستی انچارج کیلاش وجے ورگیہ نے کہا کہ یہ تو ہونا ہی تھا، ترنمول کانگریس کے ساتھ کا م کرنا کسی کے لئے بھی ممکن نہیں ہے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Dec 02, 2020 11:10 PM IST