உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سابق وزیر اعظم واجپئی کو ان کی زندگی میں ہی خراج تحسین پیش کردیا گیا

    نئی دہلی۔ ابھی زیادہ دن نہیں گزرے ہیں جب جھارکھنڈ کی وزیر تعلیم نے ہندستان کے سابق صدر عبدالکلام کو ان کی زندگی میں ہی خراج تحسین پیش کر دی تھی۔

    نئی دہلی۔ ابھی زیادہ دن نہیں گزرے ہیں جب جھارکھنڈ کی وزیر تعلیم نے ہندستان کے سابق صدر عبدالکلام کو ان کی زندگی میں ہی خراج تحسین پیش کر دی تھی۔

    نئی دہلی۔ ابھی زیادہ دن نہیں گزرے ہیں جب جھارکھنڈ کی وزیر تعلیم نے ہندستان کے سابق صدر عبدالکلام کو ان کی زندگی میں ہی خراج تحسین پیش کر دی تھی۔

    • News18
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ ابھی زیادہ دن نہیں گزرے ہیں جب جھارکھنڈ کی وزیر تعلیم نے ہندستان کے سابق صدر عبدالکلام کو ان کی زندگی میں ہی خراج تحسین پیش کر دی تھی۔ تاہم اب کچھ دنوں بعد اسی سلسلہ کا ایک اور تازہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب اڑیسہ کے ایک اسکول نے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کو جیتے جی خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کے اعزاز میں ایک دن کے لئے چھٹی کا اعلان بھی کر دیا۔ واقعہ گزشتہ جمعہ کا بتایا جا رہا ہے۔

      انڈین ایکسپریس کی خبر کے مطابق، اڑیسہ کے بالاسور ضلع میں واقع ایک پرائمری اسکول کے پرنسپل کمل کانت داس نے جمعہ کو سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کے انتقال کی خبر دے دی۔ حالانکہ ان کے انتقال کی خبر جھوٹی تھی اور وہ زندہ ہیں۔

      بتایا جا رہا ہے کہ داس ایک دیگر اسکول میں ٹیچرز ٹریننگ پروگرام میں حصہ لینے گئے تھے۔ تب انہی کے کسی ساتھی استاد نے انہیں یہ بتایا۔ اس کے بعد پرنسپل کی ہدایات کے تحت طالب علموں اور اساتذہ نے اسکول میں واجپئی جی کی یاد میں ایک تعزیتی اجلاس کا انعقاد کیا اور اس کے بعد اسکول کی چھٹی کر دی گئی۔

      معاملہ جب اسکول سے باہر آیا تو گاؤں کے لوگوں نے ضلع کلکٹر کے پاس اس کی شکایت کی۔ ضلع کلکٹر سناتن ملک نے بتایا کہ اسکول کے پرنسپل داس کو معطل کر دیا گیا ہے اور ضرورت پڑی تو اس کے خلاف مجرمانہ مقدمہ بھی چلایا جائے گا۔
      First published: