உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Unemployment: ہندوستان میں بے روزگاری کی شرح میں بلند ترین اضافہ! بیشتر ملازمین Job Security کو لے کر بھی فکر مند

    دسمبر میں شہری بے روزگاری کی شرح بڑھ کر 9.30 فیصد ہو گئی

    دسمبر میں شہری بے روزگاری کی شرح بڑھ کر 9.30 فیصد ہو گئی

    اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ دسمبر میں شہری بے روزگاری کی شرح 8.2 فیصد سے بڑھ کر 9.3 فیصد ہو گئی جو پچھلے مہینے میں تھی جبکہ دیہی بے روزگاری کی شرح 6.4 فیصد سے 7.3 فیصد بڑھ گئی۔

    • Share this:
      سنٹر فار مانیٹرنگ انڈین اکانومی (CMIE) کے اعداد و شمار کے مطابق دسمبر 2021 میں ہندوستان میں بے روزگاری کی شرح گذشتہ چار ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔ دسمبر میں بے روزگاری کی شرح نومبر میں 7.0 فیصد سے بڑھ کر 7.9 فیصد ہوگئی، جو اگست میں 8.3 فیصد کے بعد سب سے زیادہ ہے۔

      ہندوستان کی کئی ریاستوں میں اومی کرون (Omicron) ویرینٹ اور سماجی دوری کی پابندیوں کے کیسوں میں اضافے کے بعد ملک میں اقتصادی سرگرمی اور صارفین کی جانب سے اشیا و خدمات کی خریداری کو نقصان پہنچا ہے۔ اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ دسمبر میں شہری بے روزگاری کی شرح 8.2 فیصد سے بڑھ کر 9.3 فیصد ہو گئی جو پچھلے مہینے میں تھی جبکہ دیہی بے روزگاری کی شرح 6.4 فیصد سے 7.3 فیصد بڑھ گئی۔

      بہت سے ماہرین اقتصادیات کو خدشہ ہے کہ اومی کرون ویرینٹ پچھلی سہ ماہی میں دیکھی گئی معاشی بحالی کو پلٹ سکتا ہے۔ بے روزگاری پر ممبئی میں قائم سی ایم آئی ای کے اعداد و شمار کو ماہرین اقتصادیات اور پالیسی سازوں نے قریب سے دیکھا ہے کیونکہ حکومت ماہانہ اعداد و شمار جاری نہیں کرتی ہے۔

      دسمبر میں شہری بے روزگاری کی شرح بڑھ کر 9.30 فیصد ہو گئی جبکہ دیہی روزگاری 7.28 فیصد رہی۔ شہری اور دیہی دونوں بے روزگاری میں بالترتیب 8.21 فیصد اور 6.44 فیصد سے پچھلے مہینے میں نمایاں اضافہ دیکھا گیا۔ بے روزگاری میں اضافے کی وجہ سے معاشی سرگرمی اور صارفین کی خریداری پر بھی اثر پڑا ہے، جو دنیا بھر میں کورونا کے نئے ویرینٹ کے ابھرنے کے بعد کورونا کے کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے۔

      دریں اثنا حال ہی میں کی گئی ایک تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ شہری ہندوستانیوں میں بے روزگاری اور کورونا وائرس سرفہرست ہیں۔ دسمبر کے لیے Ipsos What Worries the World Global سروے کے نتائج کے مطابق تقریباً 70 فیصد ہندوستانی بھی مانتے ہیں کہ ملک درست سمت میں آگے بڑھ رہا ہے۔ تاہم ہندوستانی بے روزگاری کے بارے میں فکر مند ہیں اور ان کی فہرست میں سب سے اوپر جاب سیکیورٹی کے خدشات ہیں۔

      دنیا بھر میں اومی رون قسم کے پھیلاؤ کی وجہ سے کورونا وائرس ایک بار پھر پریشانی کی سب سے بڑی وجہ بن کر ابھرا ہے۔ محقق نے کہا کہ ہندوستانیوں میں وبائی بیماری تشویش کی تیسری سب سے بڑی وجہ ہے، جس میں گزشتہ ماہ کے مقابلے میں کورونا وائرس کے خدشات پھر سے بڑھ رہے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: