உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مغربی بنگال : بی جے پی ممبر پارلیمنٹ کے گھر پر پھینکے گئے دیسی بم ، پارٹی نے ٹی ایم سی پر لگایا الزام

    مغربی بنگال : بی جے پی ممبر پارلیمنٹ کے گھر پر پھینکے گئے دیسی بم ، پارٹی نے ٹی ایم سی پر لگایا الزام ۔ (ANI)

    مغربی بنگال : بی جے پی ممبر پارلیمنٹ کے گھر پر پھینکے گئے دیسی بم ، پارٹی نے ٹی ایم سی پر لگایا الزام ۔ (ANI)

    دھماکوں کی جانکاری ملنے کے بعد مغربی بنگال کے گورنر جگدیپ دھنکھڑ نے ریاست میں لا اینڈ آرڈر کی صورتحال پر سوالات اٹھائے ہیں ۔ دھنکھڑنے لکھا کہ مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات کے وقت سے شروع ہونے والا تشدد کم ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      کولکتہ : مغربی بنگال میں ہونے والے ضمنی الیکشن میں اب میں صرف چند دن ہی باقی رہ گئے ہیں اور ایک مرتبہ پھر ریاست میں لا اینڈ آرڈر کی صورتحال بگڑتی ہوئی دکھائی دے رہی ہے ۔ بدھ کو مغربی بنگال سے بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن پارلیمنٹ ارجن سنگھ کے گھر کے باہر زبردست بم دھماکہ ہوا ۔

      موصولہ جانکاری کے مطابق کولکاتہ کے پاس واقع بی جے پی ممبر پارلیمنٹ ارجن سنگھ کے گھر پر بدھ کی صبح تین بم پھینکے گئے ، جس میں ان کے گھر کے لوہے کے گیٹ کو نقصان پہنچا ہے ۔ تاہم اس بم دھماکے میں کسی جانی نقصان کی کوئی خبر نہیں ہے ۔ دوسری جانب بنگال بی جے پی کے صدر دلیپ گھوش نے اس معاملہ میں ٹی ایم سی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ حملہ آور غالبا بنگال میں حکمران ترنمول کانگریس سے تعلق رکھتے ہیں ۔



      اطلاعات کے مطابق بی جے پی ممبر پارلیمنٹ ارجن سنگھ کے گھر کے باہر اس وقت حملہ کیا گیا جب وہ گھر پر موجود نہیں تھے۔ حالانکہ اس وقت ان کے کنبہ کے سبھی افراد گھر کے اندر ہی موجود تھے ۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس جائے موقع پر پہنچ گئی اور تفتیش شروع کردی ۔ سی سی ٹی وی فوٹیج کے ذریعہ حملہ آوروں کا سراغ لگانے کی کوشش کی جارہی ہے ۔

      ادھر دھماکوں کی جانکاری ملنے کے بعد مغربی بنگال کے گورنر جگدیپ دھنکھڑ نے ریاست میں لا اینڈ آرڈر کی صورتحال پر سوالات اٹھائے ہیں ۔ دھنکھڑنے لکھا کہ مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات کے وقت سے شروع ہونے والا تشدد کم ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے ۔ ممبر پارلیمنٹ کے گھر کے باہر ہونے والا بم دھماکہ انتہائی سنجیدہ معاملہ ہے اور ریاست میں لا اینڈ آرڈر کی صورتحال پر سوالات کھڑے کرتا ہے۔ میں اس معاملہ میں جلد کارروائی کی توقع کرتا ہوں ۔


      وہیں اس معاملہ میں ارجن سنگھ کا بیان بھی سامنے آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضمنی الیکشن سے پہلے مجھے قتل کرنے کی سازش کی جا رہی ہے ۔ بی جے پی نے مجھے بھوانی پور کا انچارج بنایا ہے ۔ حملہ کرنے والے ہی اس پورے معاملہ کی جانچ بھی کریں گے اور پہلے کی طرح ہی ہر معاملہ کو رفع دفع کردیا جائے گا۔

      بتادیں کہ ارجن سنگھ مغربی بنگال کے بیرک پور لوک سبھا حلقہ سے ممبر پارلیمنٹ ہیں ۔ انہوں نے بی جے پی امیدوار کے طور پر سال 2019 میں لوک سبھا الیکشن لڑا اور جیت حاصل کی تھی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: