ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

وہ ہمسفر تھی، زندگی بھر ساتھ نبھانے کا وعدہ کیا تھا لیکن اپنے ہی شوہر کی قاتل قراردی گئی

کولکاتا ہائی کورٹ کے ایڈوکیٹ رجت دے کی موت کے معاملے میں ایسے ہی چہرے بےنقاب ہوٸے ہیں جس پر یقین کر پانا مشکل ہے کیونکہ قاتل کوٸی اور نہیں رجت دے کی اہلیہ انندیتا پال ہے۔ کورٹ نے اہلیہ کو مجرم قرار دیتے ہوٸے 16 ستمبر کو سزا سنانے کا اعلان کیا ہے۔

  • Share this:
وہ ہمسفر تھی، زندگی بھر ساتھ نبھانے کا وعدہ کیا تھا لیکن اپنے ہی شوہر کی قاتل قراردی گئی
شوہر کے قتل کا مجرم قرار دیتے ہوئے کورٹ نے انندیتا کو 16 ستمبر کو سزا سنانے کا کیا اعلان

کولکاتہ۔ ہمارے ملک میں غیر فطری اموات کے ہزاروں معاملے ہر روز سامنے آتے ہیں۔ ان اموات پر کی جانے والی تحقیقات میں ایسے ایسے چہرے بے نقاب ہوتے ہیں جن پر یقین کر پانا مشکل ہوتا ہے۔ کولکاتا میں ایسا ہی ایک معاملہ سامنے آیا ہے جس میں بیوی کو شوہر کے قتل کا مجرم قرار دیا گیا ہے۔ کولکاتا ہائی کورٹ کے ایڈوکیٹ رجت دے کی موت کے معاملے میں  ایسے ہی چہرے بےنقاب ہوٸے ہیں جس پر یقین کر پانا مشکل ہے کیونکہ قاتل کوٸی اور نہیں رجت دے کی اہلیہ انندیتا پال ہے۔ کورٹ نے اہلیہ کو مجرم قرار دیتے ہوٸے 16 ستمبر کو سزا سنانے کا اعلان کیا ہے۔


کولکاتا کے نیو ٹاٶن کے رہاٸشی رجت دے کی 24نومبر 2018 کو اپنے فلیٹ میں غیر فطری موت ہوٸی تھی۔ رجت کے والد کے مطابق انہیں فون پر اطلاع ملی کہ رجت کی حالت تشویشناک ہے۔ وہ ٹیکسی کے ذریعہ اپنے بیٹے کے گھر پہنچے تو دیکھا کہ ان کے بیٹےکا مردہ جسم فرش پر پڑا ہے۔ رجت کے والد نے نیو ٹاٶن پولیس کو اس کی اطلاع دی اور سب سے پہلے انہوں نے اپنی بہو انندیتا پر الزام لگایا کہ انندیتا ہی ان کے بیٹے کی قاتل ہے۔ بہو انندیتا پال نے اپنے سسر کے تمام الزاات کو غلط بتاتے ہوٸے کہا کہ وہ جب کمرے میں آٸی تو دیکھا کہ رجت بیڈ سے زمین پر گر ے ہیں اور ہارٹ اٹیک کی وجہ سے ان کی موت ہو گئی ہے۔


انندیتا جو خود پشے سے وکیل ہیں، انہوں نے کہا کہ ان کے شوہر کی موت ایک فطری واردات ہے لیکن بعد میں اس نے اپنا بیان بدلا اور کہا کہ رجت نے خودکشی کی ہے۔ موت کے 6 دنوں بعد پولیس نے انندیتا کو گرفتار کیا۔ ہاٸی کورٹ میں انندیتا کی ضمانت کی عرضی خارج ہو گئی۔ پھر معاملہ سپریم کورٹ پہنچا جہاں انندیتا کو ضمانت مل گئی جبکہ ریاست کے باراسات عدالت میں پورا معاملہ زیر سماعت تھا۔


باراسات عدالت میں سماعت کے دوران جج نے اس معاملے میں پولیس کو پھٹکار لگاتے ہوئے کہا کہ یہ معاملہ خودکشی کا نہیں ہے بلکہ رجت کا قتل کیا گیا ہے اور جج نے رجت کی اہلیہ کو قتل کا ذمہ دار قرار دیا۔ قصوروار قرار دئیے جانے پر انندیتا کمرہ عدالت میں روپ ڑی اور خود کو بےقصور بتایا۔ وہیں اب یہ بات بھی سامنے آٸی ہے کہ رجت انندیتا کو ذہنی و جسمانی اذیتیں دیتا تھا اور واردات والے دن ڈاکٹروں نے انندیتا کو آرام کرنے کا مشورہ دیا تھا لیکن رجت اسے تشدد کا نشانہ بنارہا تھا جس سے تنگ آکر انندیتا نے رجت کو نشانہ بنایا جو اس کے قتل کا سبب بنا۔ رجت اور انندیتا کی ایک بیٹی بھی ہے۔
رجت کے والد نے بہو کو قصوروار قرار دئیے جانے پر اطمینان کا اظہار کیا اور اب سبھوں کو 16 ستمبر کے فیصلے کا انتظار ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 15, 2020 03:44 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading