உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بنگال میں جماعت اسلامی کی تجویز پر ترنمول کانگریس نے بڑھایا قدم

    بنگال میں جماعت اسلامی کی تجویز پر ترنمول کانگریس نے بڑھایا قدم

    بنگال میں جماعت اسلامی کی تجویز پر ترنمول کانگریس نے بڑھایا قدم

    بنگال میں بڑھتی سیاسی سرگرمیوں کے ساتھ جہاں ایک جانب بی جے پی مضبوط پارٹی کے طور پر ابھر کر سامنے آرہی ہے وہیں برسراقتدار جماعت ترنمول کانگریس نے ریاست میں بی جے پی کے خلاف مضبوط سیاسی اتحاد پر زور دیتے ہوئے کانگریس و لفٹ کو ترنمول کے ساتھ اتحاد کرنے کی پیش کش کی ہے

    • Share this:
    مغربی بنگال میں سیاسی جماعتوں کی سرگرمیوں کے ساتھ سماجی تنظیمیں بھی سرگرم ہیں۔ بی جے پی کے خلاف سماجی تنظیموں کے سر میں سر ملاتے ہوئے سیاسی تنظمیں بھی متحدہ محاذ بنانے پر زور دے رہی ہیں۔ مہینوں پہلے بنگال میں شروع کی گئی جماعت اسلامی بنگال شاخ کی سیاسی مہم کو درست بتاتے ہوئے ترنمول کانگریس نے بھی ریاست میں لفٹ، کانگریس و ترنمول کانگریس کے درمیان سیاسی اتحاد کے لئے کوششیں تیز کی ہیں۔

    بنگال میں بڑھتی سیاسی سرگرمیوں کے ساتھ جہاں ایک جانب بی جے پی مضبوط پارٹی کے طور پر ابھر کر سامنے آرہی ہے وہیں برسراقتدار جماعت ترنمول کانگریس نے ریاست میں بی جے پی کے خلاف مضبوط سیاسی اتحاد پر زور دیتے ہوئے کانگریس و لفٹ کو ترنمول کے ساتھ اتحاد کرنے کی پیش کش کی ہے۔ ترنمول ایم پی سوگتا رائے نے لفٹ و کانگریس سے ترنمول کا ساتھ دینے اور ایک ساتھ الیکشن لڑنے کی اپیل کی۔ ریاست میں بڑھتی سیاسی سرگرمیوں کے درمیان سیاسی پارٹیوں کے لئے ہر دن ایک نئے چلینج کے ساتھ سامنے آرہا ہے۔ کانگریس و لفٹ نے ایک ساتھ الیکشن لڑنے کا اعلان کرتے ہوئے تمام سیکولر جماعتوں کو ایک متحدہ محاذ کے بینر تلے ساتھ لینے کا اعلان کیا ہے۔ وہیں ترنمول کانگریس کے کئی بڑے لیڈران کے پارٹی چھوڑنے سے پارٹی کو پریشانی کا سامنا ہے یہی وجہ ہے کہ ترنمول ایم پی سوگتا رائے نے لفٹ و کانگریس سے دیدی کا ساتھ دینے کی اپیل کی ہے۔

    کانگریس لیڈر عبدالمنان نے ریاست میں ترنمول کانگریس کے تئیں عوام کا بھروسہ ختم ہونے کا دعویٰ کرتے ہوئے بی جے پی کی سیاسی مضبوطی کے لئے ممتا بنرجی کو ذمہ دار بتاتے ہوئے ترنمول کی اپیل کو ناقابل قبول بتایا۔ وہیں سی پی ایم ایم ایل اے سوجن چکرورتی نے بھی ترنمول کانگریس کی جانب سے لفٹ و کانگریس کو اتحاد میں شامل ہونے کی اپیل کو حیران کن بتاتے ہوئے کہا کہ آج بی جے پی اور ترنمول دونوں ہی جماعتیں لوگوں کو گمراہ کر رہی ہیں جس کا مقابلہ صرف لفٹ ہی کرسکتی ہے۔

    جماعت اسلامی ہند بنگال شاخ کی جانب سے بی جے پی کے خلاف ریاست کی تین بڑی جماعتوں کو ایک ساتھ لانے کے لئے مہم چلائی جارہی ہے جس کی باز گشت سیاسی طور پر بھی اب سنائی دے رہی ہے۔ بہرحال آنے والے دنوں میں بی جے پی کے خلاف یہ تینوں جماعتیں مضبوط محاذ بنانے میں کامیاب ہوتی ہیں یا نہیں یہ دیکھنا اہم ہے۔
    Published by:Nadeem Ahmad
    First published: