ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

مغربی بنگال اردو اکیڈ می کا ملک کے مشاہیرادب کو ایوارڈ و انعامات نوازنے کا فیصلہ

جن شخصیتوں کوایوارڈ دینے کافیصلہ کیا گیا ہے ان میں لکھنو صحافت کے شاہنواز قریشی ،پروفیسر صدیق الرحمن قدوائی ،صحافت کے شعبے میں نامور صحافی و ادیب وممبرپارلیمنٹ راجیہ سبھااحمد سعید ملیح آبادی اور ممتازصحافی وسیم الحق کومبلغ70 ہزارروپیہ،توصیفی سنداور مومنٹو پرمشتمل ایوارڈ دیا جائے گا

  • UNI
  • Last Updated: Aug 09, 2016 09:20 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
مغربی بنگال اردو اکیڈ می کا ملک کے مشاہیرادب کو ایوارڈ و انعامات نوازنے کا فیصلہ
مغربی بنگال اردو اکادمی: فائل فوٹو

کلکتہ : مغربی بنگا ل اردواکیڈمی نے ریاست و بیرون ریاست کے مشاہیرادب کو ان کی علمی ایوارڈ کے اعتراف میں ایوارڈسے نوازنے کافیصلہ کیاہے ۔ جن شخصیتوں کوایوارڈ دینے کافیصلہ کیا گیا ہے ان میں لکھنو صحافت کے شاہنواز قریشی ،پروفیسر صدیق الرحمن قدوائی ،صحافت کے شعبے میں نامور صحافی و ادیب وممبرپارلیمنٹ راجیہ سبھااحمد سعید ملیح آبادی اور ممتازصحافی وسیم الحق کومبلغ70  ہزارروپیہ،توصیفی سنداور مومنٹو پرمشتمل ایوارڈ دیا جائے گا۔

اکیڈمی نے ریاستی سطح پر علمی و ادبی خدمات کیلئے آفاق مرزا اور ڈاکٹر دبیراحمد صدر شعبہ اردو مولاناآزاد مبلغ 35ہزارروپیہ کے ساتھ توصیفی سنداور ایوارڈسے نوازا جائے گا۔ اس کے علاوہ ریاستی سطح پر تحقیقی خدمات کیلئے پروفیسر عبد المنان سابق صدرشعبہ اردو کولکاتا یونیورسٹی اور ڈاکٹر معصوم شرقی (جگتدل شمالی 24 پرگنہ) ڈاکٹرشانتی رنجن بھٹا چاریہ ایوارڈ سے نوازے جانے کافیصلہ کیا گیا ہے ۔ان دونوں شخصیتوں کو بھی 35ہزار روپیہ کے علاوہ توصیفی سند اور مومنٹو پیش کیا جائے گا ۔

اردواکیڈمی کے کانفرنس ہال میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اکیڈمی کے وائس چیر مین پروفیسر منال شاہ القادری نے کہاکہ مغربی بنگال اردو اکیڈ می صرف ریاست کے علمی و ادبی شخصیتوں کو ایوارڈ سے نہیں نوازتی ہے بلکہ ہر سال بیرون ریاست کی ادبی و علمی شخصیتوں کو ایوارڈسے نوازتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ 20اگست کلکتہ یونیورسٹی کے آڈیٹوریم ہال میںآل انڈیامشاعرہ کاانعقادکیاجائے گا اوراس موقع پر ہی ان تمام شخصیتوں کوایوارڈ سے نوازا جائے گا ۔

انہوں نے کہا کہ اس موقع پر مغربی بنگال کے ان تمام شخصیتوں کو بھی اعزازیہ دیاجائے گا جنہوں نے بنگال میں اردو کے فروغ اور یاپھراس کی مہم سے وابستہ رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اس فہرست میں عوامی نمائندگان اوردیگراہم شخصیت شامل ہے۔ اردو اکیڈ می کے ایگزیکٹیو کمیٹی کے ممبر اور سابق مرکزی وزیرسلطان احمد نے کہاکہ اکیڈمی کے چیرپرسن ممتا بنرجی اردو کی ترقی کیلئے سنجیدہ ہیں اور وہ اکیڈمی کے کاموں کا جائزہ لیتی رہتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال جشن اقبال کے موقع پرمنعقدسیمینار میں علامہ پر پڑھے گئے مقالات، مضامین اور ان کی سوانح حیات کو اردو اکیڈمی نے شائع کیا ہے ۔ ممتابنرجی نے کہا کہ ان تینوں جلدوں کو ہندوستا ن بھر کے اردواداروں تک پہنچایا تاکہ علامہ کی افادیت میں اضافہ ہو۔ سلطان احمد نے کہا کہ قومی سطح پرتخلیقی سطح پرادبی نثر،شعری، تنقیدی ادب،تحقیقی ادب،سائنسی، تکنیکی اورسماجی موضوعات اور ادب اطفال کے موضوع پرکتابیں لکھنے والوں کو بھی ایوارڈ سے نوازا جائے گا ۔

انہوں نے کہاکہ اسی طرح ریاستی سطح پر ان موضوعات پرکتابیں لکھنے والوں کو ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔جن مصنفین کو ایوارڈ سے نوازا جائے گا ان میں ڈاکٹرصادقہ نوابسحر ، ڈاکٹرمجیب الرحمن شہرزعلی گڑھ، ڈاکٹرافسرکاظمی جمشید پور، جمشید احمدبردوان ، ڈاکٹرمحمد اقتدار حسین فاروقی ، ڈاکٹرابو الکلام ناگپور ، ڈاکٹرعبد العزیزعرفان ، احسان ثاقب ، ابو بکرعباد، ،اکٹرفاضل احسن ہاشمی ، حیدربیانی، ریحانہ نواب، محسن باعشن حسرت، ظہیرانور کلکتہ ،محمدعمران قریشی پرولیا، شکیل افروز ، انجینئر خورشیدغنی ، عبد الودو انصاری ، حشمت کمال پاشا، نو ر پیکر ہوڑہ،سلطان شاہد کلکتہ، ف س اعجاز ، عرفان بنارسی ، مختار احمدفردین ، افضال عاقل کی کتابوں پرانعامات دیاجائے گا۔ان تمام مصنفین کو پندرہ ۔پندرہ ہزارروپیہ دیے جائیں گے۔
First published: Aug 09, 2016 09:20 PM IST