உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    این آرسی کے کام میں تاخیر پر سپریم کورٹ نے کی مرکز کی سرزنش

    سپریم کورٹ نے آسام میں این آرسی سے متعلق کام میں ہورہی تاخیر پر منگل کو مرکزی حکومت کی سخت سرزنش کی ۔

    سپریم کورٹ نے آسام میں این آرسی سے متعلق کام میں ہورہی تاخیر پر منگل کو مرکزی حکومت کی سخت سرزنش کی ۔

    سپریم کورٹ نے آسام میں این آرسی سے متعلق کام میں ہورہی تاخیر پر منگل کو مرکزی حکومت کی سخت سرزنش کی ۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      سپریم کورٹ نے آسام میں قومی شہریت رجسٹر (این آرسی )سے متعلق کام میں ہورہی تاخیر پر منگل کو مرکزی حکومت کی سخت سرزنش کی ۔ چیف جسٹس رنجن گوگوئی کی صدارت والی بنچ نے کہاکہ ایسا لگتا ہے کہ مرکزی وزارت داخلہ این آر سی سے متعلق سبھی عمل کو تباہ کرنا چاہتی ہے ۔
      جسٹس گوگوئی نے کہاکہ ،’’ ہم داخلہ سکریٹری کو طلب کریں گے ۔‘‘ انھوں نے حکومت کی سخت سرزنش کرتے ہوئے کہاکہ عدالت عظمی این آر سی کی آخری رپورٹ کے لیے 31جولائی 2019کی تاریخ نہیں بڑھے گی ۔این آرسی کا کام اور انتخابات ساتھ ساتھ چلنے چاہیئں ۔
      واضح رہے کہ حکومت چاہتی ہے کہ آسام میں این آر سی کے کام کو لوک سبھا انتخابات کے نوٹیفکیشن کی تاریخ سے لیکر پولنگ کے دوہفتہ بعد تک ملتوی رکھاجائے ۔ عدالت این آر سی کے عمل کو ختم کرنے کے خلاف دائرکئی عرضیوں پر سماعت کررہی ہے ۔


       
      First published: