منی پور کے وزیر، ایم پی اور اراکین اسمبلی کے گھروں میں آتش زنی، کرفیو نافذ

امپھال۔ منی پور میں زبردست آتش زنی کا واقعہ پیش آیا ہے۔ ریاستی حکومت کے ایک وزیر، ایک رکن پارلیمنٹ اور پانچ ممبران اسمبلی کے مکانوں کو چوڑاچندپور ضلع میں نامعلوم افراد نے اسمبلی میں کچھ بل منظور کئے جانے کو لے کر آگ کے حوالے کر دیا جس کی وجہ سے شہر میں کرفیو لگانا پڑا ہے۔

Sep 01, 2015 08:05 AM IST | Updated on: Sep 01, 2015 08:06 AM IST
منی پور کے وزیر، ایم پی اور اراکین اسمبلی کے گھروں میں آتش زنی، کرفیو نافذ

امپھال۔ منی پور میں زبردست آتش زنی کا واقعہ پیش آیا ہے۔ ریاستی حکومت کے ایک وزیر، ایک رکن پارلیمنٹ اور پانچ ممبران اسمبلی کے مکانوں کو چوڑاچندپور ضلع میں نامعلوم افراد نے اسمبلی میں کچھ بل منظور کئے جانے کو لے کر آگ کے حوالے کر دیا جس کی وجہ سے شہر میں کرفیو لگانا پڑا ہے۔ آتش زنی کے اس واقعہ میں کل سات مکانوں کو آگ کے حوالے کیا گیا۔ منی پور کے اصل باشندوں کے تحفظ کو لے کر تین بل اسمبلی میں منظور کئے جانے کے کچھ گھنٹوں بعد یہ واقعہ ہوا۔

ایک پولیس افسر نے بتایا کہ باہری منی پور تھانگسو بیت کے ایم پی، ریاست کے خاندانی فلاح و بہبود کے وزیر پھگجانگپھانگ تونسيم اور ہیگلپ اسمبلی حلقہ کے ممبر اسمبلی منگا ویفئی اور تھانلوم کے ونگجاگين سمیت پانچ اراکین اسمبلی کے گھر پھونک دیئے گئے۔ انہوں نے بتایا کہ حالات کو ذہن میں رکھتے ہوئے انتظامیہ نے چوڑاچندپور شہر میں غیر معینہ کرفیو لگا دیا ہے۔

Loading...

افسر نے بتایا کہ ایک مکان میں آتش زنی کی کوشش کرنے کے دوران شدید زخمی ہونے کے بعد ایک حملہ آور کو اسپتال میں داخل کرایا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ منی پور اسمبلی میں کچھ بلوں کو پاس کرنے کے خلاف پہاڑی اضلاع میں مظاہرہ کو لے کر تین قبائلی طالب علم تنظیموں نے 12 گھنٹے کے بند کا اعلان کیا تھا۔

 

 

 

Loading...