ہندوستان پرامن بقائے باہمی اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کاگہوارہ : صدر جمہوریہ

نئی دہلی۔ صدر جمہوریہ ہند پرنب مکھرجی نے کل 13 دسمبر 2015 کو کولکاتہ میں ڈائی سیس آف کلکتہ کی دو صد سالہ تقریب کے اختتامی اجلاس کا افتتا ح کیا ۔

Dec 14, 2015 08:38 AM IST | Updated on: Dec 14, 2015 08:40 AM IST
ہندوستان پرامن بقائے باہمی اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کاگہوارہ : صدر جمہوریہ

نئی دہلی۔ صدر جمہوریہ ہند پرنب مکھرجی نے کل  13 دسمبر 2015 کو کولکاتہ میں ڈائی سیس آف کلکتہ کی دو صد سالہ تقریب کے اختتامی اجلاس کا افتتا ح کیا ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے صدر جمہوریہ نے کہا کہ ہر مذہب انسانیت کے بنیادی اقدار کی ترغیب دیتا ہے۔ ہندوستان میں گھل مل جانے والی خصوصیت کے باعث بہت سے اہم مذاہب کو یہاں فروغ ملا ۔یہاں مختلف عقیدوں پر عمل پیرا لوگ مدتوں سے ہم آہنگی کے ساتھ گزر بسر کر رہے ہیں ۔

صدر جمہوریہ نے کہا کہ یہ مختلف مذاہب کی سر زمین رہی ہے جس کے باعث ہمارا ملک پر امن بقائے باہمی اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کا گہوارہ بن گیا ہے۔ یہ وہی ملک ہے جہاں عیسائی برادری کو ان کے پرامن اور انسان دوست ہونے اور ملک کی تعمیر میں ان کی سخاوت مندانہ خدمات کے لیے عزت و احترام سے دیکھا جاتا ہے۔ ہمارا سماجی ڈھانچہ مستحکم رہے گا جب ہر فرد ذات پات، زبان اور مذہب سے قطع نظر گزر بسر کرے اور بلاخوف وعصبیت کے، ترقی میں حصہ لے۔

صدر جمہوریہ نے ڈائیو سیس آف کلکتہ کو وسیع پیمانے پر کولکاتہ شہر کے تئیں پابند عہد رہنے اوراپنی خدمات کے ثمر آور سفر کے دو سو سال پورا کرنے پر خراج تحسین پیش کیا ۔

Loading...

Loading...