உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فاروق عبداللہ پر ای ڈی کی بڑی کارروائی، بدعنوانی کے معاملے میں 12 کروڑ کی جائیداد سیز

    فاروق عبداللہ پر ای ڈی کی بڑی کارروائی، بدعنوانی کے معاملے میں 12 کروڑ کی جائیداد سیز

    فاروق عبداللہ پر ای ڈی کی بڑی کارروائی، بدعنوانی کے معاملے میں 12 کروڑ کی جائیداد سیز

    جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن (جے کے سی اے) منی لانڈرنگ معاملے میں سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ کی 11.86 کروڑ کی جائیداد انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے سیز کردی ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن (JKCA) منی لانڈرنگ معاملے میں سابق وزیر اعلیٰ فاروق عبداللہ (Farooq Abdulla) کی 11.86 کروڑ کی جائیداد انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ED) نے سیز کردی ہے۔ پرائیویٹ نیوز چینل این ڈی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے یہ خبر دی ہے۔ نیشنل کانفرنس کے صدر اور سابق مرکزی وزیر کے خلاف انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی ٹیم مبینہ مالی بے ضابطگیوں کے معاملے کھنگال رہی ہے۔ یہ سارے معاملے جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن (JKCA) میں مالی بدعنوانی سے متعلق ہیں۔ سی بی آئی نے سال 2018 میں فاروق عبداللہ اور تین دیگر کے خلاف چارج شیٹ فائل کی تھی۔ جموں وکشمیر کرکٹ ایسوسی ایشن میں 2002 سے 2011 کے درمیان کا یہ معاملہ تقریباً 43.69 کروڑ مبینہ بے ضباطگیوں سے متعلق ہے۔

      انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ایو رڈی) نے دعویٰ کیا ہے کہ 2006 سے 2012 کے دوران فاروق عبداللہ نے اپنی طاقت کا استعمال کرتے ہوئے جے کے سی اے کے فنڈ کا استعمال کیا۔ ایجنسی کا دعویٰ ہے کہ 45 کروڑ سے زیادہ کی رقم پر مبینہ ط ور پر ہاتھ صاف کیا گیا ہے۔ نیشنل کانفرنس کے لیڈر فاروق عبداللہ کی سیز کی گئی جائیداد میں تین رہائشی اور ایکپ تجارتی املاک کے ساتھ اور چار پلیٹ بھی شامل ہیں۔ ان سبھی جائیداد کی قیمت 11.86 کروڑ روپئے ہے، جبکہ مارکیٹ ویلیو 60 سے 70 کروڑ روپئے کی ہے۔

      نیشنل کانفرنس کے لیڈر فاروق عبداللہ کی سیز کی گئی جائیداد میں تین رہائشی اور ایکپ تجارتی املاک کے ساتھ اور چار پلیٹ بھی شامل ہیں۔ ان سبھی جائیداد کی قیمت 11.86 کروڑ روپئے ہے، جبکہ مارکیٹ ویلیو 60 سے 70 کروڑ روپئے کی ہے۔
      نیشنل کانفرنس کے لیڈر فاروق عبداللہ کی سیز کی گئی جائیداد میں تین رہائشی اور ایکپ تجارتی املاک کے ساتھ اور چار پلیٹ بھی شامل ہیں۔ ان سبھی جائیداد کی قیمت 11.86 کروڑ روپئے ہے، جبکہ مارکیٹ ویلیو 60 سے 70 کروڑ روپئے کی ہے۔


      اکتوبر 2020 میں فاروق عبداللہ سے اس بارے میں دو بار پوچھ گچھ ہوچکی ہے۔ نیشنل کانفرنس اس پورے جانچ عمل کو ریاست میں اسپیشل اسٹیٹس کے موضوع پر سبھی پارٹیوں کو ایک اسٹیج پر لانے سے جوڑ کر دیکھ رہی ہے۔ 84 سالہ فاروق عبداللہ کی پارٹی کے ترجمان نے کہا، ’ای ڈی کی طرف سے لیٹر گپکر ڈکلریشن کے تحت کشمیر میں پیپلز الائنس کے اعلان کے بعد آیا ہے۔ یہ واضح اشارہ ہے کہ پورا معاملہ سیاسی انتقام سے متعلق ہے’۔

      معاملے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کی طرف سے کہا گیا، ’یہ ہونے والا تھا، جس کی ہمیں امید تھی۔ پارٹی نے کہا کہ مرکز کی بی جے پی حکومت ایجنسیوں کا استعمال کشمیر میں بنے نئے سیاسی حالات کو توڑنے میں کر رہی ہے۔ بی جے پی سیاسی طور پر اپنے مخالفین کا مقابلہ نہیں کرسکتی۔ سال 2019 میں فاروق عبداللہ کو ای ڈی نے جولائی میں پوچھ گچھ کے لئے بلایا تھا، اگلے ماہ مرکزی حکومت نے جموں وکشمیر کے خصوصی درجے کو ختم کرتے ہوئے ریاست کو مرکز کے زیر انتظام دو حصوں میں تقسیم کردیا تھا۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: