உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ED نے Xiaomi کے نائب صدر منو کمار جین کو فاریکس کیس میں کیا طلب، کیا ہے وجہ؟

    Youtube Video

    ذرائع نے بتایا کہ جین سے ضروری منظوری کی تفصیلات کے علاوہ Xiaomi کے مختلف شیئر ہولڈنگ، فنڈنگ ​​اور مالیاتی بیانات کی تفصیلات فراہم کرنے کو کہا گیا ہے۔ چینی فون بنانے والی کمپنیاں اور ان کی ذیلی کمپنیاں ہندوستانی تحقیقاتی ایجنسیوں کی نظر میں ہیں۔

    • Share this:
      چینی موبائل فون بنانے والی کمپنی Xiaomi انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ED) سکینر کے تحت آ گئی ہے۔ وفاقی ایجنسی نے اپنے عالمی نائب صدر منو کمار جین کو 1,000 کروڑ روپے کی مبینہ غیر ملکی ترسیلات کے سلسلے میں طلب کیا ہے، جو ایجنسی کے مطابق زرمبادلہ کے قوانین کے مطابق نہیں ہے۔

      ایک سینئر اہلکار نے کہا کہ یہ ان (جین) کو جاری کیا گیا تیسرا سمن ہے، جب وہ پہلے کے سمن پر حاضر ہونے میں ناکام رہے۔ عہدیدار نے تفصیلات بتائے بغیر کہا کہ انہیں بدھ کو ایجنسی کے بنگلورو دفتر میں حاضر ہونے کو کہا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق جین Xiaomi کے اس کے انڈیا آپریشنز کے سابق مینیجنگ ڈائریکٹر رہ چکے ہیں اور اسی وجہ سے وہ کمپنی کی سرگرمیوں اور ہندوستان سے باہر منتقل ہونے والی اہم رقم سے واقف تھے۔

      یہ معلوم ہوا ہے کہ ای ڈی نے فارن ایکسچینج مینجمنٹ ایکٹ (فیما) کے تحت فروری میں اپنی محتاط انکوائری شروع کی تھی اور اسے ایک قابل ذکر رقم پر مشتمل ترسیلات کے ثبوت ملے تھے۔

      جب رابطہ کیا گیا تو Xiaomi کے ترجمان نے کہا کہ وہ ایک قانون کی پاسداری کرنے والی اور ذمہ دار کمپنی ہے۔ ہم زمینی قوانین کو بہت زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔ ہم تمام قواعد و ضوابط کے ساتھ مکمل طور پر تعمیل کرتے ہیں اور اسی پر یقین رکھتے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ ہم حکام کے ساتھ ان کی جاری تحقیقات میں تعاون کر رہے ہیں تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ ان کے پاس تمام مطلوبہ معلومات موجود ہیں۔

      مزید پڑھیں: EXPLAINED: پاکستان میں سیاسی ہلچل کا باقی دنیا کے لیے کیا ہےمطلب؟ کیاعالمی سیاست ہوگی متاثر؟

      ذرائع نے بتایا کہ جین سے ضروری منظوری کی تفصیلات کے علاوہ Xiaomi کے مختلف شیئر ہولڈنگ، فنڈنگ ​​اور مالیاتی بیانات کی تفصیلات فراہم کرنے کو کہا گیا ہے۔ چینی فون بنانے والی کمپنیاں اور ان کی ذیلی کمپنیاں ہندوستانی تحقیقاتی ایجنسیوں کی نظر میں ہیں۔

      یہ بھی پڑھئے : کیا رمضان کے مہینہ میں میک اپ کرنے سے ٹوٹ جاتا ہے روزہ؟



      اطلاع کے مطابق دسمبر-جنوری میں، آئی ٹی ڈیپارٹمنٹ نے متعدد شہروں میں ان فرموں کے کئی دفاتر کی تلاشی لی۔ محکمہ نے کہا تھا کہ ان فرموں نے اپنے اور بیرون ملک واقع گروپ کمپنیوں کے حوالے سے رائلٹی کی شکل میں رقم بھیجی، جو ہزاروں کروڑ میں ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: