مہاراشٹر میں حکومت سازی پر اب بھی منتھن جاری، این سی پی نے شیوسینا کے سامنے رکھیں یہ شرطیں: ذرائع

ذرائع کے مطابق، این سی پی نے شیوسینا کے سامنے حکومت بنانے کے لئے وہی 50-50 کا فارمولہ رکھا ہےجو شیوسینا نے بی جے پی کے سامنے رکھا تھا۔

Nov 13, 2019 09:35 AM IST | Updated on: Nov 13, 2019 10:26 AM IST
مہاراشٹر میں حکومت سازی پر اب بھی منتھن جاری، این سی پی نے شیوسینا کے سامنے رکھیں یہ شرطیں: ذرائع

مہاراشٹر میں منگل کو صدر راج کے اعلان کے باوجود شیو سینا، کانگریس اور شرد پوار کی

این سی پی کے ساتھ  حکومت بنانے کی قواعد میں مصروف ہے۔ شیوسینا چاہتی ہے کہ این سی پی کے ساتھ اتحاد کی بات چیت کسی نتیجے پر پہنچے تاکہ مہاراشٹر میں حکومت تشکیل دی جا سکے۔ ذرائع کے مطابق، این سی پی نے شیوسینا کے سامنے حکومت بنانے کے لئے وہی 50-50 کا فارمولہ رکھا ہےجو شیوسینا نے بی جے پی کے سامنے رکھا تھا۔

اس کا مطلب صاف ہے کہ ڈھائی سال وزیر اعلی شیوسینا کا رہے گا اور ڈھائی سال کانگریس اور این سی پی اتحاد کا کوئی لیڈر وزیراعلیٰ کی کرسی پر رہے گا۔

Loading...

این سی پی سے جڑے ذرائع کا کہنا ہے کہ این سی پی کے ممبران اسمبلی کی تعداد شیوسینا سے صرف دو کم ہے۔ شیوسینا نے مہاراشٹر اسمبلی انتخابات میں 56 سیٹوں پرجیت درج  کی تھی، جبکہ این سی پی نے 54 سیٹوں پر کامیابی حاصل کی۔ اس طرح  اگر شیوسینا ، این سی پی اور کانگریس مل کر حکومت بنائیں تو یہ تعداد 154 ہوجائے گی۔

اس سے قبل منگل کو شیوسینا کے سربراہ ادھو ٹھاکرے نے دعوی کیا کہ وہ کانگریس اور این سی پی کے ساتھ اپنے نظریاتی اختلافات کو بھلا کر مستحکم حکومت تشکیل دے سکتے ہیں۔

Loading...