اے آئی اے ڈی ایم کے : ششی کلا کو 'آٹو رکشہ' تو پننيرسیلوم کو ملا بجلی کا کھمبا

ششی کلا کی پارٹی کا انتخابی نشان اب 'آٹو رکشہ' ہو گا تو وہیں پننيرسیلوم کی پارٹی کا انتخابی نشان 'بجلی کا کھمبا' ہو گا۔

Mar 23, 2017 01:44 PM IST | Updated on: Mar 23, 2017 01:44 PM IST
اے آئی اے ڈی ایم کے : ششی کلا کو 'آٹو رکشہ' تو پننيرسیلوم کو ملا بجلی کا کھمبا

نئی دہلی۔ الیکشن کمیشن نے اپنا فیصلہ سناتے ہوئے ششی کلا اور اے پننيرسیلوم کو نئے انتخابی نشان دے دیئے ہیں۔ ششی کلا کی پارٹی کا انتخابی نشان اب 'آٹو رکشہ' ہو گا تو وہیں پننيرسیلوم کی پارٹی کا انتخابی نشان 'بجلی کا کھمبا'  ہو گا۔ چناو نشان کے ساتھ ساتھ دونوں کی پارٹیوں کے نام بھی طے ہو گئے ہیں۔

پننيرسیلوم خیمے نے اپنی پارٹی کا نام اے آئی اے ڈی ایم کے پراٹچی تھلیوی اماں رکھا ہے تو ششی کلا کیمپ نے اپنی پارٹی کا نام اے آئی اے ڈی ایم کے  اماں رکھا ہے۔ وی ششی کلا خیمے نے الیکشن کمیشن کو اپنے نئے نشانات کے لئے تین متبادل دیے تھے جن میں آٹو رکشہ، بیٹ اور کیپ شامل تھا۔

Loading...

انا ڈی ایم کے کے دونوں خیموں نے پارٹی کے انتخابی نشان 'دو پتیوں' کے استعمال پر الیکشن کمیشن کی روک پر تعجب کا اظہار کیا تھا اور کہا تھا  کہ وہ اسے واپس حاصل کرنے کے لئے ہر ممکن کوشش کریں گے۔ تمل ناڈو کے سابق وزیر اعلی پننيرسیلوم نے ایک بیان میں کہا تھا کہ الیکشن کمیشن کے سامنے مضبوط ثبوت پیش کرنے کے باوجود ان کی پارٹی کو انتخابی نشان نہیں ملنا حیرت ناک اور مایوس کن تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ وہ کسی بھی قیمت پر انتخابی نشان واپس لے کر رہیں گے۔

وہیں، جیل کی سزا کاٹ رہیں انا ڈی ایم کے جنرل سکریٹری وی کے ششی کلا کے بھتیجے ديناكرن کا بھی کہنا تھا کہ پارٹی کارکن پہلے بھی اس طرح کی صورت حال کا سامنا کر چکے ہیں جب الیکشن کمیشن نے انا ڈی ایم کے بانی ایم جی رام چندرن کی موت کے بعد 1987 میں پارٹی کے انتخابی نشان کے استعمال پر روک لگا دی تھی۔

 

Loading...