اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ادھو ٹھاکرے اور شندے گروپ ابھی نہیں کرسکیں گے شیو سینا کا نام اور انتخابی نشان کا استعمال، الیکشن کمیشن نے لگائی روک

    ادھو ٹھاکرے اور وزیر اعلیٰ ایکناتھ شندے کے درمیان شیو سینا کے حق سے متعلق لڑائی جاری ہے۔ (فائل فوٹو)

    ادھو ٹھاکرے اور وزیر اعلیٰ ایکناتھ شندے کے درمیان شیو سینا کے حق سے متعلق لڑائی جاری ہے۔ (فائل فوٹو)

    الیکشن کمیشن نے مہاراشٹر کے اندھیری ایسٹ (اندھیری مشرق) سیٹ پر ہونے والے آئندہ اسمبلی ضمنی انتخاب میں شیوسینا کے دونوں گروپوں کی طرف سے پارٹی کے نام اور نشان کے استعمال پر پابندی لگا دی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئ دہلی: شیوسینا کو لے کر ادھو ٹھاکرے اور وزیر اعلی ایکناتھ شندے کے درمیان جاری لڑائی کے درمیان الیکشن کمیشن نے بڑا قدم اٹھایا ہے۔ کمیشن نے اندھیری ایسٹ (اندھیری مشرق) سیٹ پر ہونے والے آئندہ اسمبلی ضمنی انتخاب میں شیوسینا کے دونوں گروپوں کی طرف سے پارٹی کے نام اور نشان کے استعمال پر پابندی لگا دی ہے۔

      الیکشن کمیشن کی طرف سے دیئے گئے عبوری حکم میں کہا گیا ہے کہ اندھیری مشرق ضمنی الیکشن میں دونوں گروپوں میں سے کسی کو بھی ’شیو سینا‘ کے لئے ریزرو ’دھنش اور تیر‘ کے انتخابی نشان کا استعمال کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

      اس میں کہا گیا ہے کہ آئندہ ضمنی الیکشن کے لئے دونوں گروپوں کو الیکشن کمیشن کی جانب سے مطلع کردہ انتخابی نشانات کی فہرست دی جائے گی جس میں سے دونوں دھڑے مختلف نشانات کا انتخاب کر سکتے ہیں۔ الیکشن کمیشن نے اس کے ساتھ ہی دونوں گروپوں کو 10 اکتوبر کو دوپہر ایک بجے تک اپنا انتخابی نشان کا انتخاب کرکے جانکاری دینے کو کہا ہے۔

      واضح رہے کہ ممبئی میں اندھیری (ایسٹ) اسمبلی سیٹ پر ضمنی انتخاب 3 نومبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے، جس کا نتیجہ 6 نومبر کو سامنے آئے گا۔ اس ضمنی الیکشن کو مہاراشٹر کے وزیر اعلیٰ ایکناتھ شندے اور ادھو ٹھاکرے کی قیادت والے گروپ کی مقبولیت کو پہلے امتحان کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ ایسے میں دونوں ہی گروپوں نے پارٹی کے انتخاب نشان ’دھنش اور تیر‘ پر دعویٰ کیا ہے۔ یہ معاملہ سپریم کورٹ تک پہنچا، جس نے الیکشن کمیشن کو اس معاملے پر فیصلے کی اجازت دی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: