உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    فرضی سیاسی جماعتوں پر الیکشن کمیشن کی بڑی کارروائی،86 کو لسٹ سے ہٹایا، جانیے وجہ

    الیکشن کمیشن آف انڈیا۔ فائل فوٹو ۔

    الیکشن کمیشن آف انڈیا۔ فائل فوٹو ۔

    Election Commission:الیکشن کمیشن کے مطابق 253 جماعتوں کے خلاف کارروائی سات ریاستوں کے چیف الیکشن آفیسرس کی رپورٹ کی بنیاد پر کی گئی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi | Uttar Pradesh | Bihar | Telangana
    • Share this:
      Election Commission:الیکشن کمیشن آف انڈیا نے بڑی کارروائی کرتے ہوئے 86 رجسٹرڈ غیر تسلیم شدہ سیاسی جماعتوں کو اپنی فہرست سے ہٹادیا ہے۔ اس کے ساتھ، 253 مزید رجسٹرڈ غیر تسلیم شدہ جماعتوں کو بھی غیر فعال فہرست میں ڈال دیا گیا ہے۔ کمیشن کی جانب سے کہا گیا ہے کہ ان جماعتوں نے 2014 سے اب تک نہ تو کوئی اسمبلی اور پارلیمنٹ کا الیکشن لڑا ہے اور نہ ہی کمیشن کی طرف سے بھیجے گئے 16 نوٹسز میں سے کسی کا جواب دیا ہے۔

      کمیشن نے ان جماعتوں کو انتخابی نشان حکم، 1968 کے تحت کسی بھی طرح کا کوئی فائدہ دینے پر بھی پابندی لگادی ہے۔ جن پر کارروائی کی گئی ہے وہ سبھی جماعتیں، بہار، دلی، کرناٹک، مہاراشٹر، تمل ناڈو، تلنگانہ اور اترپردیش کی ہیں۔

      الیکشن کمیشن کی فہرست سے ہٹائے گئے جماعتوں کی تعداد
      الیکشن کمیشن نے اس سے پہلے بھی اس سال مئی اور جون کے مہینے میں کارروائی کرتے ہوئے مجموعی طور پر 198 رجسٹرڈ غیر تسلیم شدہ جماعتوں کو فہرست سے ہٹادیا تھا۔ اس طرح فہرست سے ہٹائے گئے سیاسی جماعتوں کی کُل تعداد 198+86=284 ہوگئی ہے۔ بتادیں کہ چیف الیکشن کمشنر راجیو کمار اور انوپ چندر پانڈے فرضی سیاسی جماعتوں کے خلاف لگاتار کارروائی کر رہے ہیں، جس میں منگل کو اتنی جماعتوں پر یہ بڑی کارروائی کی گئی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      مسلم ایجوکیشن اینڈ کیریئر پروموشن سوسائٹی نے تعلیم کو عام کرنے کیلئے مذہب کا بندھن کیا ختم

      یہ بھی پڑھیں:
      حجاب پر پابندی معاملہ کی سپریم کورٹ میں سماعت، سلمان خورشید نے دی یہ دلیلیں

      الیکشن کمیشن کے مطابق 253 جماعتوں کے خلاف کارروائی سات ریاستوں کے چیف الیکشن آفیسرس کی رپورٹ کی بنیاد پر کی گئی ہے۔ ان جماعتوں کو غیر فعال جماعتوں کی فہرست میں ڈال دیا گیا ہے۔ آر پی ایکٹ 1951 کی دفعہ 19اے کے تحت، سیاسی جماعتوں کو اپنے نام، ہیڈ آفس کے پتے، عہدیداروں اور پین میں تبدیلی کی جانکاری کمیشن کو بغیر دیری کے مہیا کرانا ضروری ہے، لیکن ان جماعتوں کی طرف سے جب ان کا جواب نہیں آیا تو یہ جماعتیں بتائے گئے پتے پر موجود نہیں پائے گئے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: