ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

کورونا وائرس:مہلوکین کی عزت وتوقیراورحقوق کےلیےخصوصی قوانین کیےجائیں وضع،این ایچ آر سی کی ہدایت

این ایچ آر سی (National Human Rights Commission) نے کوویڈ 19 سے متاثرہ لاشوں کی بد انتظامی اور بے احترامی کے بارے میں میڈیا میں بڑی تعداد میں اموات اور رپورٹس کو مدنظر رکھتے ہوئے مرکز اور ریاستوں کو جاں بحق افراد کے وقار اور حقوق کے تحفظ کے لئے ایک نوٹس جاری کیا۔

  • Share this:
کورونا وائرس:مہلوکین کی عزت وتوقیراورحقوق کےلیےخصوصی قوانین کیےجائیں وضع،این ایچ آر سی کی ہدایت
علامتی تصویر

این ایچ آر سی نے حال ہی میں مرکز اور تمام ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کو ایک ایڈوائزری جاری کیا۔جس میں اس نے کووڈ۔19 سے متاثر ہو کر مرنے والوں کی لاشوں کو بدنام کرنے کی اطلاعات کے بعد مردہ افراد کے وقار اور حقوق کے تحفظ کے لئے متعدد سفارشات مرتب کیں ہیں۔ایک بیان میں قومی انسانی حقوق کمیشن (National Human Rights Commission) نے کہا کہ ان سفارشات میں مردہ افراد کے حقوق کے تحفظ کے لئے ایک مخصوص قانون سازی کرنا شامل ہے۔ اس نے مزید کہا کہ ’’اجتماعی تدفین یا آنتم سنسکار نہیں ہونے دیا جانا چاہئے کیونکہ یہ مردہ کے وقار کے حق کے منافی ہے‘‘۔اسپتال انتظامیہ کو بل کی ادائیگی کے التواء کی گنتی پر جان بوجھ کر کسی بھی لاش کو قبضے میں رکھنے سے واضح طور پر پابندی عائد کرنی چاہئے۔ سفارشات میں کہا گیا ہے کہ "وارثین کے لیے لاشوں کو محفوظ حالات میں ذخیرہ کرنا چاہئے۔"


جمعرات کو کیے گئے یہ مشاورتNHRC کے تناظر میں اہمیت کا حامل ہے ، جس نے مرکز ، بہار اور اتر پردیش حکومتوں کو گنگا ندی میں تیرتی لاشوں سے ملنے والی لاشوں کے بارے میں شکایت پر نوٹس جاری کرتے ہوئے اہمیت کا اظہار کیا۔


علامتی تصویر
علامتی تصویر


این ایچ آر سی (National Human Rights Commission) نے کوویڈ 19 سے متاثرہ لاشوں کی بد انتظامی اور بے احترامی کے بارے میں میڈیا میں بڑی تعداد میں اموات اور رپورٹس کو مدنظر رکھتے ہوئے مرکز اور ریاستوں کو جاں بحق افراد کے وقار اور حقوق کے تحفظ کے لئے ایک نوٹس جاری کیا۔

مردوں کے حقوق کے پینل نے یہ مؤقف اختیار کیا ہے کہ موت کے کسی واقعے کی اطلاع ملنے کے بعد فوری طور پر قریبی پولیس اسٹیشن اور ایمرجنسی ایمبولینس خدمات، انتظامیہ یا قانونی حکام کو جو بھی ممکن ہو اسے اطلاع دینا ہر شہری کا فرض ہے۔

کمیشن نے مرکزی سکریٹری بمبدھار پردھان کے ذریعہ مرکزی سیکریٹری داخلہ، مرکزی صحت اور خاندانی بہبود کے سکریٹری اور چیف سکریٹریوں، ریاستوں اور مرکز کے زیرانتظام علاقوں کے منتظمین کو لکھے گئے خط میں اپنی سفارشات پر عملدرآمد کے لئے کہا ہے اور چار ہفتوں میں کارروائی کی رپورٹ دی گئی۔

دیگر سفارشات کے علاوہ NHRC نے یہ سمجھا ہے کہ ہر ریاست کو اموات کے معاملات کا ایک ضلع کے لحاظ سے ڈیجیٹل ڈیٹا قائم رکھنا چاہئے۔ کسی شخص کی موت کو بیک وقت تمام دستاویزات جیسے بینک اکاؤنٹ ، آدھار کارڈ ، انشورنس میں اپ ڈیٹ کرنا چاہئے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 15, 2021 08:10 PM IST