உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پریاگ راج: شاپنگ کامپلیکس میں گھس کر مالکن سے چھیڑ چھاڑ، دکانوں میں زبردستی لگادیا تالا

    پریاگ راج: شاپنگ کامپلیکس میں گھس کر مالکن سے چھیڑ چھاڑ، دکانوں میں زبردستی لگادیا تالا

    پریاگ راج: شاپنگ کامپلیکس میں گھس کر مالکن سے چھیڑ چھاڑ، دکانوں میں زبردستی لگادیا تالا

    کوتوالی انسپکٹر امر سنگھ رگھوونشی نے بتایا کہ تحریری شکایت کی بنیاد پر چھیڑ چھاڑ، مارپیٹ، گالی گلوج، دھمکی، مجرمانہ سازش سمیت دیگر دفعات میں رپورٹ درج کی گئی ہے۔ جانچ پڑتال کی جارہی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Allahabad, India
    • Share this:
      پریاگ راج: کوتاولی کے پاس شاپنگ کامپلیکس میں گھس کر اس کی مالکن سے چھیڑ چھاڑ، مارپیٹ، گالی گلوج کی گئی۔ الزام ہے کہ پرانے ملازمین نے کئی لوگوں کے ساتھ مل کر یہ واقعہ تب انجام دیا جب خاتون کے شوہر شہر سے باہر تھے۔ پولیس نے تحریر کی بنیاد پر تین نامزد و دیگر نامعلوم پر کیس درج کیا ہے۔

      متاثرہ نے پولیس کو تحریری شکایت دے کر بتایا ہے کہ بھوشن یادو اس کا پرانا ملازم ہے۔ الزام ہے کہ اس نے ارونا کمار ساہو اور انوراگ سنگھ و دیگر کے ساتھ مل کر 19 ستمبر کو کامپلیکس میں گھس کر گالی گلوج کرتے ہوئے دھمکی دی۔

      20 ستمبر کو اس کے شوہر باہر گئے تھے اور یہ جان کر ملزم کئی نامعلوم افراد کو لے کر آیا اور چھیڑچھاڑ، گالی گلوج کرتے ہوئے کئی دکانوں میں تالا لگا دیا۔ مخالفت پر اس کے بزرگ والد کو پیٹا گیا اور بچوں کے اغوا کی دھمکی دی گئی۔

      شکایت کے باوجود پولیس نے کارروائی نہیں کی۔ اس سے ملزمین کا حوصلہ بڑھتا گیا اور 21 ستمبر کی رات آٹھ بجے ایک بار پھر ملزم کامپلیکس میں گھس آئے، پھر اس کی دکان میں تالا لگادیا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      اتراکھنڈ: لاپتہ 19 سال کی ریسپنسٹ کو قتل کرکے نہر میں پھینکا، بی جے پی لیڈر کا بیٹا گرفتار

      یہ بھی پڑھیں:
      پروٹیکشن کے ساتھ بنائے جنسی تعلقات، حاملہ غیرشادی خاتون اسقاط حمل کے لئے پہنچ گئی عدالت

      بولنے۔سننے سے معذور آرٹسٹ بشیر احمد نے اپنی بہترین مصوری سے قائم کی مثال لیکن۔۔۔

      واقعہ سے گاہکوں میں افراتفری مچ گئی۔ ساتھ ہی پورا واقعہ سی سی ٹی وی کیمرے میں ریکارڈ بھی ہوا ہے۔ کوتوالی انسپکٹر امر سنگھ رگھوونشی نے بتایا کہ تحریری شکایت کی بنیاد پر چھیڑ چھاڑ، مارپیٹ، گالی گلوج، دھمکی، مجرمانہ سازش سمیت دیگر دفعات میں رپورٹ درج کی گئی ہے۔ جانچ پڑتال کی جارہی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: